உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ورلڈ کلاس گیند بازوں کی پہلے دھنائی کی، پھر گیند لگنے سے اسٹار بلے باز کی ہوئی موت

    ورلڈ کلاس گیند بازوں کی پہلے دھنائی کی، پھر گیند لگنے سے اسٹار بلے باز کا ہوئی موت

    ورلڈ کلاس گیند بازوں کی پہلے دھنائی کی، پھر گیند لگنے سے اسٹار بلے باز کا ہوئی موت

    آسٹریلیا نے 27 نومبر کو اپنا ایک باصلاحیت بلے باز کھو دیا تھا۔ ایک میچ میں فلپ ہیوز (Phillip Hughes) جارحانہ بلے بازی کر رہے تھے، تبھی سین ایباٹ کی باونسر ان کے سرپر لگی اور وہ میدان پر گر گئے۔ انہیں ایئر لفٹ کرکے اسپتال لے جایا گیا، جہاں ان کی سرجری ہوئی اور وہ کوما میں چلے گئے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: 7 سال... آج پورے 7 سال ہوگئے ہیں۔ ایک ابھرتے سلامی بلے باز کو دنیا چھوڑے ہوئے۔ 25 سال کی عمر میں جس نے دنیا چھوڑ دی۔ بلے باز ایسا کہ ورلڈ کلاس گیند بازوں کے دل میں بھی خوف بیٹھنے لگا تھا۔ دنیا کا اگلا اسٹار مانا جا رہا تھا... مگر 27 نومبر 2014 کا دن، آسٹریلیائی سلامی بلے باز فلپ نیوز (Phillip Hughes) کی زندگی کا آخری دن ثابت ہوا۔ میچ کے دوران سر پر گیند لگنے سے ان کی موت ہوگئی۔ شیفیلڈ شیلڈ (Sheffield Shield) کے ایک میچ میں نیو ساوتھ ویلس کے سین ایباٹ کی باونسر ہیوز کے سرکے گزشتہ حصے میں لگی اور وہ وہیں میدان پر گرگئے۔ انہیں اسپتال لے جایا گیا، جہاں دو دن بعد یعنی 27 نومبر کو وہ زندگی کی جنگ ہار گئے۔

      اس کے ساتھ ہی آسٹریلیا نے اس دن اپنا ایک باصلاحیت بلے باز بھی کھو دیا۔ انہیں مستبل کا اسٹار کیوں مانا جاتا تھا، اس کی وجہ ان کے اعدادوشمار ہیں۔ فلپ ہیوز نے 26 انٹرنیشنل ٹسٹ میچ میں 1535 رن بنائے، جس میں تین سنچری شامل ہے۔ وہیں انہوں نے 25 انٹرنیشنل ونڈے میچوں میں 826 رن بنائے، جس میں 2 سنچری اور تین نصف سنچری شامل ہیں۔ انہوں نے 114 فرسٹ کلاس میچوں میں 9 ہزار 23 رن بنائے، جس میں 26 سنچری شامل ہے۔ وہیں لسٹ اے کرکٹ میں ان کے نام تین ہزار 639 رن ہے۔

      کیسے ہوا تھا حادثہ

      بات 25 نومبر 2014 کی ہے۔ میدان تھا سڈنی کا تاریخی میدان۔ ساوتھ آسٹریلیا اور نیو ساوتھ ویلس کی ٹیم آمنے سامنے تھی۔ فلپ ہیوز 63 رن پر بلے بازی کر رہے تھے۔ ان سے ہر کسی کو سنچری کی امید تھی۔ پھر سین ایباٹ نے باونسر پھینکا، جس پر وہ ہک شاٹ کھیلنے کی کوشش کر رہے تھے، مگر وہ چوک گئے اور گیند ان کے سر کے پچھلے حصے میں جا لگی۔ گیند لگتے ہی فلپ ہیوز زمین پر گر پڑے اور بے ہوش ہوگئے۔ انہیں ایئر لفٹ کیا گیا۔ ان کی سرجری ہوئی اور وہ کوما میں چلے گئے اور پھر 27 نومبر کو انہوں نے دنیا کو الوداع کہہ دیا۔

      فلپ ہیوز جب 20 سال کے تھے تو انہوں نے اپنے کیریئر کے دوسرے ٹسٹ میچ میں جنوبی افریقہ کے خلاف شاندار سنچری لگائی تھی۔ جنوبی افریقہ کی ٹیم میں اس وقت ڈیل اسٹین، مورنے مورکل جیسے ورلڈ کلاس گیند باز تھے۔ انہوں نے ان گیند بازوں کی جم کر دھنائی کی۔ پہلی اننگ میں 115 رن اور دوسری اننگ میں 160 رن بنا ڈالے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: