ہوم » نیوز » اسپورٹس

سوربھ گانگولی کو بطور کپتان تیار کرنے میں محمد اظہر الدین کا اہم کردار: راشد لطیف

پاکستان کے سابق کپتان راشد لطیف نے محمد اظہرالدین کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہندستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان محمد اظہرالدین نے سوربھ گنگولی میں قائدانہ صلاحیتیں پیدا کرنے اور نکھارنے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 11, 2020 02:53 PM IST
  • Share this:
سوربھ گانگولی کو بطور کپتان تیار کرنے میں محمد اظہر الدین کا اہم کردار: راشد لطیف
پاکستان کے سابق کپتان راشد لطیف نے محمد اظہرالدین کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہندستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان محمد اظہرالدین نے سوربھ گنگولی میں قائدانہ صلاحیتیں پیدا کرنے اور نکھارنے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

نئی دہلی: پاکستان کے سابق کپتان راشد لطیف نے محمد اظہرالدین کی تعریف کرتے ہوئےکہا ہے کہ ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان محمد اظہرالدین نے سوربھ گانگولی میں قائدانہ صلاحیتیں پیدا کرنے اور نکھارنے میں اہم کردار ادا کیا تھا اور کپتانی کے معاملے میں گانگولی کامیابی کا کریڈٹ محمد اظہر الدین کو جاتا ہے اور اس روایت میں ہندوستانی کرکٹ کو مہندر سنگھ دھونی جیسا کپتان حاصل کرنے میں مدد ملی۔


راشد لطیف نے کہا کہ کپتانی کے معاملے میں گانگولی کامیابی کا کریڈٹ محمد اظہر الدین کو جاتا ہے اور اس روایت میں ہندوستانی کرکٹ کو مہندر سنگھ دھونی جیسا کپتان حاصل کرنے میں مدد ملی۔
راشد لطیف نے کہا کہ کپتانی کے معاملے میں گانگولی کامیابی کا کریڈٹ محمد اظہر الدین کو جاتا ہے اور اس روایت میں ہندوستانی کرکٹ کو مہندر سنگھ دھونی جیسا کپتان حاصل کرنے میں مدد ملی۔


انٹرنیشنل کرکٹ سے حال ہی میں ریٹائر ہونے والے سابق کپتان ایم ایس دھونی کی تعریف کرتے ہوئے راشد لطیف نے 90 کی دہائی میں اظہرالدین کی تیار کردہ ثقافت کے بارے میں بات کی۔ یوٹیوب چینل کاٹ بیہائنڈ میں راشد لطیف نے کہا کہ میں محمد اظہرالدین کا بہت احترام کرتا ہوں۔ انہوں نے طویل عرصہ تک ہندوستانی کرکٹ کی خدمت کی اور پھر اس کے بعد سوربھ گانگولی جیسے کپتان کی میراث چھوڑی۔ سوربھ گانگولی کو بطور کپتان تیار کرنے میں اظہرالدین کا اہم کردار تھا۔ سچن تندولکر اور راہل دراوڑ جیسے لیجنڈری کھلاڑی سوربھ گانگولی کی کپتانی میں کھیلے۔ سوربھ گانگولی نے 1992 میں ونڈے ڈیبیو کیا تھا اور 1996 میں ٹیسٹ ڈیبیو کیا تھا۔ اظہرالدین دونوں موقعوں پر ہندوستانی ٹیم کے کپتان تھے۔ گانگولی نے اظہرالدین کی کپتانی میں 12 ٹیسٹ اور 53 ونڈے میچ کھیلے۔


پاکستان کے سابق کپتان راشد لطیف نے محمد اظہرالدین کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہندستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان محمد اظہرالدین نے سوربھ گنگولی میں قائدانہ صلاحیتیں پیدا کرنے اور نکھارنے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔
پاکستان کے سابق کپتان راشد لطیف نے محمد اظہرالدین کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہندستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان محمد اظہرالدین نے سوربھ گنگولی میں قائدانہ صلاحیتیں پیدا کرنے اور نکھارنے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔


پاکستان کے سابق وکٹ کیپر بیٹسمین راشد لطیف نے کہا کہ دھونی کی کپتانی میں گانگولی اور اظہرالدین دونوں کی کپتانی کی خصوصیات ہیں۔ راشد لطیف نے کہا کہ گانگولی کو کپتان کی حیثیت سے تیار کرنے کا اظہرالدین کو بہت زیادہ کریڈٹ ملنا چاہئے۔ اسی کے ساتھ ہی گانگولی نے دھونی کے کیریئر کی تیاری میں بھی اہم کردار ادا کیا۔ راشد لطیف نے کہا کہ محمد اظہرالدین نے گانگولی کو تیارکیا اور دھونی نے اظہرالدین اور گانگولی کی خوبیوں کو سمجھ کر جدید کرکٹ کے مطابق اپنا انداز ڈیزائن کیا۔ انہیں اپنی ٹیم کے میچ جیتنے پر اعتماد تھا۔ دھونی نے ٹیم میں جیتنے والی ذہنیت کو جنم دیا۔
دھونی کی کپتانی کے بارے میں بات کرتے ہوئے لطیف نے کہا کہ دھونی قائد تھے۔


انہوں نے نوجوان کرکٹرز کی حمایت کی اور انہیں اعتماد دیا۔ راشد لطیف نے کہا کہ دھونی نے ورلڈ کپ کے تین ٹائٹل جیتے۔ کسی اور کپتان نے یہ کارنامہ انجام نہیں دیا ہے۔ دھونی جیسے کپتان خطرہ مول لیتے ہیں اور اپنی ٹیم کو آگے لے جاتے ہیں۔ دھونی نے نوجوان کھلاڑیوں کو ترقی دی۔ انہوں نے اپنے کردار کے مطابق کرکٹرز کو ڈھالا۔ ایسے کپتان اپنے کھلاڑیوں میں اعتماد پیدا کرتے ہیں۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 11, 2020 02:15 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading