ہوم » نیوز » اسپورٹس

کشمیر: کرکٹ میں لڑکیوں کا بڑھتا رجحان، قومی سطح پر کھیل مقابلوں میں منوا رہی ہیں اپنا لوہا

یہاں کرکٹ میں کچھ لڑکیوں نے اپنی ٹیمیں تشکیل دی ہیں۔ مختلف اکیڈمیوں میں یہ لڑکیاں کرکٹ کا فن سیکھ رہی ہیں۔کشمیرمیں لڑکے اورلڑکیوں کے درمیان امتیازاب دھیرے دھیرے ختم ہو رہا ہے۔لڑکیاں لڑکوں کے شانہ بہ شانہ نظرآتی ہیں۔

  • Share this:
کشمیر: کرکٹ میں لڑکیوں کا بڑھتا رجحان، قومی سطح پر کھیل مقابلوں میں منوا رہی ہیں اپنا لوہا
کشمیر: کرکٹ میں لڑکیوں کا بڑھتا رجحان، قومی سطح پر کھیل مقابلوں میں منوا رہی ہیں اپنا لوہا

 وادی کشمیر میں گذشتہ کئی برسوں سے کشمیری لڑکیاں کھیل،تجارت،فن اور دوسری سرگرمیوں میں حصہ لے رہی ہیں۔کرکٹ میں بھی لڑکیوں کا رجحان کافی بڑھ رہا ہے۔ شمالی کشمیر کے پٹن اور دیگردوسرے مقامات پر پہلی بارلڑکیوں کی خاصی تعداد کرکٹ کھیلتے ہوئےنظرآتی ہے۔ کچھ لڑکیاں ایسی ہیں جنہوں نےکھیل سرگرمیوں میں اپنا نام کمایاہے۔ رنجی اور دیگر قومی سطح کےمقابلوں میں حصہ لیا۔


یہاں کرکٹ میں کچھ لڑکیوں نے اپنی ٹیمیں تشکیل دی ہیں۔ مختلف اکیڈمیوں میں یہ لڑکیاں کرکٹ کا فن سیکھ رہی ہیں۔کشمیرمیں لڑکے اورلڑکیوں کے درمیان امتیازاب دھیرے دھیرے ختم ہو رہا ہے۔لڑکیاں لڑکوں کے شانہ بہ شانہ نظرآتی ہیں۔ کچھ لڑکیوں نےنیوز 18اردو سے بات کرتےہوئے وادی کی تمام لڑکیوں سے اپیل کی کہ وہ کھیل کے ہرمیدان میں حصہ لیں۔


کھیل سرگرمیوں سے وابستہ لڑکیوں نے نیوز18اردوکو بتایاکہ جہاں حکومت کھیل کود کےفروغ کے لئے بڑےبڑےدعویٰ کررہی ہے وہیں حکومت انہیں بہتر سہولیات فراہم نہیں کررہی۔ انہوں نے حکومت پر امتیازبرتنےکا الزام لگایا۔ لڑکیوں نے مزیدبتایاکہ لڑکوں کی ٹیموں کو اسپانسر کیاجاتا ہے لیکن لڑکیوں کو کوئی پوچھتا بھی نہیں۔ لڑکیوں نے سرکارسے مانگ کی کہ ان کے لیے ایک علیحدہ اسٹیڈیم تعمیرکیا جائےگا جہاں ہرطرح کی سہولیات فراہم ہو سکے۔




کرکٹ جیسے کھیل کے لئے وادی میں لڑکیوں کو بہترتربیت کے لیے پیشہ وارانہ کوچ تعینات کئےجائیں اورساتھ ہی وہ تمام ترسہولیات بہم ہونے چاہئیں جس سے ان کی صلاحیتوں کو مزیدجلابخشے۔ گزشتہ روزجموں میں بین الاقوامی کرکٹر سریش رینا نےبتایاکہ وہ وادی میں کرکٹ کے فروغ کیلئےکام کریں گے اور یہاں کے نوجوانوں کو تربیت دیں گے۔ ساتھ ہی انہوں نے جموں وکشمیرکی لڑکیوں کو بھی تربیت دینے کی بھی بات کہی۔


سریش رینارواں سال کے چندمہینے پہلے بھی شمالی کشمیر کےکنزر اورسرینگر بھی آئے تھے جہاں انہوں نے یہاں کے نوجوانوں کو کرکٹ کی جانب راغب کرنے کی پہل شروع کی۔کنززکرکٹ گراونڈ میں جب سریش رینہ نمودار ہوئے تھے تو نوجوانوں کا جم غفیران کےسامنے آیا۔ محکمہ یوتھ سروس اینڈ اسپورٹس بھی اب مختلف کھیلوں میں لڑکیوں کوجگہ دےرہا ہے۔ انہیں مختلف کھیل مقابلوں میں لڑکوں کے ساتھ ساتھ لڑکیوں کو بھی ترجیح دی جا رہی ہے۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Nov 26, 2020 08:35 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading