உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    رابن اتھپا نے لیا کرکٹ کے سبھی فارمیٹ سے ریٹائرمنٹ، اب IPL میں بھی نہیں کھیل گے

    رابن اتھپا نے کرکٹ کے سبھی فارمیٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کردیا۔

    رابن اتھپا نے کرکٹ کے سبھی فارمیٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کردیا۔

    Robin Uthappa announces retirement: رابن اتھپا نے بدھ کو کرکٹ کے سبھی فارمیٹ میں ریٹائرمنٹ کا اعلان کردیا۔ ہندوستانی سلامی بلے باز نے سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ کے ذریعہ سبھی کا شکریہ ادا کیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: ہندوستانی کرکٹر رابن اتھپا نے آج یعنی 14 ستمبر کو کرکٹ کے سبھی فارمیٹ میں ریٹائرمنٹ لینے کا اعلان کردیا۔ تیز طرار بلے باز نے سوشل میڈیا پر ایک جذباتی پوسٹ کے ذریعہ پیار اور احترام کے لئے سبھی کا شکریہ ادا کیا۔ رابن اتھپنا جارحانہ بلے بازی کے لئے جانے جاتے تھے اور سفید گیند کرکٹ کے دونوں فارمیٹ میں ہندوستان کی نمائندگی کی۔

      انہوں نے ٹوئٹ کیا، ’اپنے ملک اور اپنی ریاست، کرناٹک کی نمائندگی کرنا میرے لئے سب سے بڑا احترام رہا ہے۔ حالانکہ سبھی اچھی چیزوں کا خاتمہ ہونا چاہئے۔ دل کی آواز پر میں نے کرکٹ کے تمام فارمیٹ سے ریٹائرمنٹ لینے کا فیصلہ کیا ہے‘۔



      رابن اتھپا کے کیریئر کی شروعات 50 اوور کے ایک روزہ میچوں سے ہوئی۔ انہوں نے گوہاٹی میں انگلینڈ کے خلاف ڈیبیو کیا۔ وہ 46 یک روزہ میچوں میں کھیلے، جس میں انہوں نے کل 934 رن بنائے، جس میں 86 ان کا بہترین اسکور تھا۔ رابن اتھپا نے 13 ٹی20 میں ہندوستان کی نمائندگی کی، جہاں انہوں نے 118.01 کے اسٹرائیک ریٹ سے 249 رن بنائے۔

      تین آئی پی ایل ٹیموں کے لئے کھیلے رابن اتھپا

      بین الاقوامی سطح پر رابن اتھپا کا کیریئر کچھ سالوں کے بعد پھیکا پڑ گیا اور انہیں نیشنل ٹیم میں جگہ نہیں ملی۔ انہوں نے آخری یک روزہ میچ 2015 میں زمبابوے کے خلاف کھیلا تھا، جہاں انہوں نے 44 گیندوں میں 31 رن بنائے تھے۔ حالانکہ، رابن اتھپا نے گھریلو ٹورنا منٹ اور انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) میں کھیلنا جاری رکھا۔ انہوں نے ٹی20 ٹورنا منٹ میں تین فرنچائزی (کولکاتا نائٹ رائیڈرس، راجستھان رائلس اور چنئی سپر کنگس) کی نمائندگی کی۔ رابن اتھپنا نے کل 205 آئی پی ایل میچ کھیلے، جس میں انہوں نے 130.35 کے اسٹرائیک ریٹ سے 4952 رن بنائے، جس میں 27 نصف سنچری بھی شامل ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: