உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شاہد آفریدی نے اپنی ہی حکومت کو گھیرا! کہا- پی سی بی میں بند ہو سرکاری مداخلت

    پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) ابھی بحران کے دور میں ہے۔ عمران خان کی حکومت گرچکی ہے۔ اس وجہ سے پی سی بی کے موجودہ چیئرمین رمیز راجہ کی کرسی بھی خطرے میں ہے۔

    پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) ابھی بحران کے دور میں ہے۔ عمران خان کی حکومت گرچکی ہے۔ اس وجہ سے پی سی بی کے موجودہ چیئرمین رمیز راجہ کی کرسی بھی خطرے میں ہے۔

    پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) ابھی بحران کے دور میں ہے۔ عمران خان کی حکومت گرچکی ہے۔ اس وجہ سے پی سی بی کے موجودہ چیئرمین رمیز راجہ کی کرسی بھی خطرے میں ہے۔

    • Share this:
      کراچی: سابق کپتان شاہد آفریدی نے پاکستان کرکٹ بورڈ (PCB) کو پوری طرح خود مختار ادارہ بنانے کی بات کی، جس کے معاملوں میں حکومت کا کوئی مداخلت نہیں ہو۔ شاہد آفریدی (Shahid Afridi) نے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ پی سی بی میں حکومت کی مداخلت نہیں ہونی چاہئے۔ چیئرمین اور بورڈ کے چیف ایگزیکٹیو افسر کی تقرری میں حکومت کا کوئی لینا دینا نہیں ہونا چاہئے۔

      شاہد آفریدی کا یہ تبصرہ ایسے وقت پر آیا ہے، جب حکومت اور وزیر اعظم کے بدلنے سے موجودہ چیئرمین رمیز راجہ (Ramiz Raja) کے مستقبل کو لے کر غیر یقینی صورتحال بنی ہوئی ہے۔ قیاس آرائیوں کا دور جاری ہے کہ نئے وزیر اعظم شہباز شریف کی پسند کے شخص کو یہ ذمہ داری دی جائے گی۔

      انہوں نے یہاں ایک پروگرام سے الگ کہا، پی سی بی کو پوری طرح سے آزاد ہونا چاہئے اور اس کی خود کے انتخابی عمل ہونا چاہئے، جس میں حکومت کی کوئی مداخلت نہ ہو۔ پاکستانی کرکٹ میں ملک کا وزیر اعظم خود ہی پی سی بی کا مقرر کردہ سرپرست مقرر ہو جاتا ہے اور وہ 2 امیدواروں کو نامزد کرتا ہے، جس میں سے عام ایک کو جنرل اسمبلی کے چیئرمین منتخب کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہر بار نیا چیئرمین آتا ہے، وہ اپنا ہی طریقہ لے کر آتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      پاکستان کے سابق کرکٹر کا انکشاف- میرے کپتان بننے کے بعد وسیم اکرم-وقار یونس مجھ سے بات نہیں کرتے تھے

      کرکٹ میں کھڑی ہوجاتی ہیں پریشانیاں

      اسے بدلنے کی بات کرتے ہوئے شاہد آفریدی نے کہا کہ اس لئے پاکستان کرکٹ پریشانیوں کا سامنا کرتا ہے۔ مجھے لگتا ہے کہ پاکستان کے گھریلو کرکٹ میں یہ چیز کافی بڑا کردار ادا کرتی ہے، کیونکہ اگر بورڈ نیا عمل لے کر آتا ہے، تو اسے سدھار دیکھنے کے لئے مناسب وقت دینا چاہئے۔ واضح رہے کہ رمیز راجہ نے گھریلو کرکٹ میں کئی تبدیلیاں کی تھیں، لیکن نئی حکومت بننے کے بعد کئی پرانے افسران پرانے فارمیٹ کو ہی نافذ کرنے کی بات کہہ رہے ہیں۔

      رمیز راجہ نے خواتین ٹی20 لیگ کو بھی شروع کرنے کی بات کہہ چکے ہیں، لیکن ان کے عہدے کے بعد بورڈ کے پورے پروگرام کی تبدیلی ہونے کا امکان ہے۔ بی سی سی آئی بھی آئندہ سال سے 6 ٹیموں کی خاتون آئی پی ایل کی شروعات کرنے جا رہا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: