உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دھونی کے نقادوں پرجم کربرسا عظیم کھلاڑی- 'اسے مت سکھاوریٹائرمنٹ کب لینا ہے'۔

    ایم ایس دھونی کی کپتانی میں ہندوستان ایک بار عالمی کپ جیت چکا ہے۔ (تصویر: اے پی)۔

    ایم ایس دھونی کی کپتانی میں ہندوستان ایک بار عالمی کپ جیت چکا ہے۔ (تصویر: اے پی)۔

    ایم ایس دھونی کے نقادوں کو آسٹریلیا کے عظیم کرکٹرشین وارن نے زبردست جواب دیا ہے۔

    • Share this:
      آئی سی سی کرکٹ عالمی کپ 2019 میں ہندوستانی کرکٹ ٹیم کی مہم میں مہندرسنگھ دھونی کا اہم  رول ہوگا۔ 37 سال کا یہ کھلاڑی اس وقت زبردست فارم میں ہے اورمسلسل اپنی  افادیت ثابت کررہا ہے۔ حالانکہ کچھ لوگوں کولگتا ہے کہ دھونی کا سب سے بہترین وقت گزرچکا ہے۔ دھونی کے نقادوں کو آسٹریلیا کے عظیم کرکٹر شین وارن نے زبردست جواب دیا ہے۔

      شین وارن نے کہا کہ دھونی پراٹھنے والے سوالوں سے وہ حیران ہیں۔ شین وارن کا ماننا ہے کہ دھونی جس طرح کا کرکٹ کھیل رہے ہیں، اسے دیکھتے ہوئے وہ جب تک چاہیں کرکٹ کھیل سکتے ہیں۔ شین وارن نے کہا 'مہندر سنگھ دھونی نے ہندوستانی کرکٹ کی زبردست خدمت کی ہے۔ انہوں نے ہندوستانی کرکٹ کے لئے اپنا سب کچھ دیا ہے، مجھے یقین نہیں ہوتا کہ کچھ لوگ مہندر سنگھ دھونی کے عالمی کپ ٹیم میں ہونے پرسوال اٹھا رہے ہیں'۔

      آسٹریلیا کےعظم کرکٹرنےمزید کہا کہ 'جہاں تک بات ریٹائرمنٹ کی ہےتو اس میں کیوں نہیں لےلیتےکی جگہ کیوں لے رہوہوبولنا چاہئے۔ صرف مہندرسنگھ دھونی یہ بتا سکتے ہیں کہ وہ ریٹائرمنٹ کب لیں گے۔ پھر چاہے اس عالمی کپ کے بعد یا پانچ سال بعد وہ جانتےہیں کہ صحیح وقت کب ہوگا۔ دھونی جب چاہیں تب ریٹائرمنٹ لےسکتے ہیں کیونکہ وہ اتنا اچھا کھیل رہے ہیں'۔

      مہندرسنگھ دھونی حال ہی میں ختم ہوئے آئی پی ایل 2019 میں زبردست فارم میں تھے۔ انہوں نے چنئی سپرکنگس کے لئے سب سے زیادہ رن بنائے تھے۔ دھونی نے اس ٹورنامنٹ میں 15 میچوں میں 83.20 کی اوسط سے 416 رن بنائے تھے۔ اس دوران ان کا اسٹرائیک ریٹ 134.62 کا تھا۔

      آسٹریلیا کے عظیم کرکٹر شین وارن۔

      سا ل2019 میں دھونی نے بلے سے کئی اہم اننگ کھیلی ہیں۔ اس سال اب تک 9 ونڈے میچوں میں انہوں نے 81.75 کی اوسط سے 327 رن بنائے ہیں۔ ان کا بہترین اسکورناٹ آوٹ 87 رن رہا ہے۔ آسٹریلیا کے خلاف ونڈے سیریزمیں انہوں نے مسلسل تین نصف سنچریاں لگائی تھی اورکل 193 رن بنائے تھے۔ وہ اس سیریز میں پلیئرآف دی سیریز منتخب کئے گئے تھے۔

      اس کے بعد جب آسٹریلیا نے ہندوستان کا دورہ کیا تھا تب دھونی دو میچ کھیلے تھے اورانہوں نے اس میں 85 رن بنائےتھے۔ ان دونوں میچوں میں ہندوستان جیتا تھا۔ اسٹمپس کے پیچھے تو دھونی کا کوئی جواب ہی نہیں ہے۔ ان کی وکٹ کیپنگ توپہلے سے بھی تیزہوگئی ہے۔
      First published: