உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہر فارمیٹ میں رہا شین وارن کا جلوہ: ٹسٹ میں 700 وکٹ ینے والے پہلے گیندباز، IPLکے پہلے چمپئن کپتان

    ہر فارمیٹ میں رہا تھا شین وارن کا جلوہ۔

    ہر فارمیٹ میں رہا تھا شین وارن کا جلوہ۔

    وارن چیمپیئن لیگ اسپنر ہونے کے ساتھ ساتھ نچلے آرڈر کے اچھے بلے باز بھی تھے۔ انہوں نے ٹیسٹ کرکٹ میں 3154 رنز بھی بنائے۔ اس میں 12 نصف سنچریاں شامل ہیں۔ تاہم وہ ایک بھی سنچری اسکور نہ کرسکے اور انہیں زندگی بھر اس کا افسوس رہا۔ وارن کا ٹیسٹ میں سب سے زیادہ اسکور 99 رنز تھا۔

    • Share this:
      سڈنی:شین وارن وہ کھلاڑی تھے جن کا اس صدی کے آغاز میں آسٹریلیا کو دنیا کی سب سے طاقتور کرکٹ ٹیم بنانے کے پیچھے سب سے بڑا کردار تھا۔ ان کے لیگ اسپن، گوگلیز اور فلیپرز کا سامنا بہترین بلے بازوں کے لیے بھی مشکل تھا۔ وارن، جو 52 سال کی عمر میں انتقال کر گئے، کرکٹ گراؤنڈ میں ان کی شاندار پرفارمنس کے لیے انہیں ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ آئیے جانتے ہیں کہ انہوں نے اپنے 15 سالہ کیریئر میں کن بلندیوں کو چھوا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Shane Warne dead: آسٹریلیائی کرکٹ لیجنڈ شین وارن نہیں رہے، کرکٹ کی دنیا میں غم کی لہر

      600 اور 700 وکٹ کا سنگ میل طئے کرنے والے پہلے گیند باز
      شین وارن ٹیسٹ کرکٹ میں 600 اور 700 وکٹوں کا سنگ میل عبور کرنے والے دنیا کے پہلے بولر بنے تھے۔ انہوں نے 2005 میں انگلینڈ کے خلاف اولڈ ٹریفورڈ ٹیسٹ میں 600 وکٹیں مکمل کیں۔ 2006 میں وارن نے میلبورن میں انگلینڈ کے خلاف 700 وکٹوں کا ہندسہ بھی عبور کیا۔ ان کا ریکارڈ بعد میں سری لنکا کے لیجنڈ آف اسپنر متھیا مرلی دھرن نے توڑا۔ مرلی نے 800 وکٹیں حاصل کیں۔ وارن اب بھی سب سے زیادہ وکٹیں لینے والے لیگ اسپنر ہیں۔ ہندوستان کے انیل کمبلے 619 وکٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

      IPL کے پہلے چمپئن کپتان
      انڈین پریمیئر لیگ (IPL) اس وقت دنیا کی سب سے بڑی لیگ ہے۔ شین وارن آئی پی ایل ٹائٹل جیتنے والے پہلے کپتان بنے تھے۔ 2008 میں، انہوں نے اپنی کپتانی میں راجستھان رائلز کو چمپئن کا ٹائٹل دلایا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Shane Warne Demise:شین وارن کی ’بال آف دی سنچوری‘ کی حیران کن کہانی

      1999 میں ورلڈ کپ کے سیمی فائنل اور فائنل میں مین آف دی میچ
      شین وارن ون ڈے کرکٹ میں بھی بہت موثر بولر تھے۔ وارن نے 1999 کے ورلڈ کپ میں آسٹریلیا کو چمپئن بنانے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔ انہیں اس ٹورنامنٹ میں آسٹریلیا کے دو اہم ترین میچوں، سیمی فائنل (جنوبی افریقہ کے خلاف) اور فائنل (پاکستان کے خلاف) میں مین آف دی میچ قرار دیا گیا تھا۔

      سنچری نہیں بنانے کا رہا افسوس
      وارن چیمپیئن لیگ اسپنر ہونے کے ساتھ ساتھ نچلے آرڈر کے اچھے بلے باز بھی تھے۔ انہوں نے ٹیسٹ کرکٹ میں 3154 رنز بھی بنائے۔ اس میں 12 نصف سنچریاں شامل ہیں۔ تاہم وہ ایک بھی سنچری اسکور نہ کرسکے اور انہیں زندگی بھر اس کا افسوس رہا۔ وارن کا ٹیسٹ میں سب سے زیادہ اسکور 99 رنز تھا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: