உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شعیب اختر نے کہا- وراٹ کوہلی سے موازنہ کے لئے بابر اعظم کو بنانے ہوں گے 30-20 ہزار رن

    بابر اعظم (Babar Azam) کی اکثر وراٹ کوہلی (Virat Kohli) سے موازنہ کیا جاتا ہے، لیکن شعیب اختر (Shoaib Akhtar) اس سے بالکل متفق نہیں ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ وراٹ کوہلی سے موازنہ کے لئے بابر اعظم کو کافی رن بنانے ہوں گے۔

    بابر اعظم (Babar Azam) کی اکثر وراٹ کوہلی (Virat Kohli) سے موازنہ کیا جاتا ہے، لیکن شعیب اختر (Shoaib Akhtar) اس سے بالکل متفق نہیں ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ وراٹ کوہلی سے موازنہ کے لئے بابر اعظم کو کافی رن بنانے ہوں گے۔

    بابر اعظم (Babar Azam) کی اکثر وراٹ کوہلی (Virat Kohli) سے موازنہ کیا جاتا ہے، لیکن شعیب اختر (Shoaib Akhtar) اس سے بالکل متفق نہیں ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ وراٹ کوہلی سے موازنہ کے لئے بابر اعظم کو کافی رن بنانے ہوں گے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پاکستان کے کپتان بابر اعظم (Babar Azam) بے حد باصلاحیت ہیں اور جس رفتار سے وہ ونڈے، ٹی-20 اور ٹسٹ کرکٹ میں سنچری لگا رہے ہیں، اسے دیکھ کر سبھی ان کا موازنہ وراٹ کوہلی (Virat Kohli) سے کرتے ہیں۔ حالانکہ پاکستان کے سابق تیز گیند باز شعیب اختر (Shoaib Akhtar) اس سے متفق نہیں ہیں۔ شعیب اختر کا ماننا ہے کہ بابر اعظم کے اندر عظیم کھلاڑی بننے کی سبھی صلاحیت اور قابلیت ہے، لیکن انہیں وراٹ کوہلی کی طرح مسلسل رن بنانے ہوں گے۔ ساتھ ہی شعیب اختر نے یہ بھی کہا کہ وراٹ کوہلی کوہلی کے ساتھ بابر اعظم کے مقابلے کافی جلدی ہو رہی ہے۔ اس کے لئے انہیں کم از کم 20 سے 30 ہزار رن بنانے ہوں گے۔

      اسپورٹس کیڑا کے ساتھ خاص انٹرویو میں شعیب اختر نے کہا، ‘بابر اعظم ایسے پر کرکٹ کھیل رہے ہیں، جب تیز گیند بازوں کی بے حد کمی ہے، لیکن وراٹ کوہلی سے موازنہ ابھی جلد بازی ہے، انہیں پہلے 20 سے 30 ہزار رن بنانے دیں، جیسے وراٹ کوہلی نے کیا ہے، تب ان کا موازنہ کریں‘۔ حالانکہ شعیب اختر نے مانا کہ بابر اعظم نے گزشتہ کچھ سالوں میں اپنی بلے بازی پر کافی محنت کی ہے اور ان کے اندر عظیم کھلاڑی بننے کی صلاحیت ہے۔

      شعیب اختر کا ماننا ہے کہ بابر اعظم کے اندر عظیم کھلاڑی بننے کی سبھی صلاحیت اور قابلیت ہے، لیکن انہیں وراٹ کوہلی کی طرح مسلسل رن بنانے ہوں گے۔
      شعیب اختر کا ماننا ہے کہ بابر اعظم کے اندر عظیم کھلاڑی بننے کی سبھی صلاحیت اور قابلیت ہے، لیکن انہیں وراٹ کوہلی کی طرح مسلسل رن بنانے ہوں گے۔


      بابر اعطم میں عظیم کھلاڑی بننے کی صلاحیت

      شعیب اختر نے کہا، ‘بابر اعظم ابھی سیکھ رہے ہیں۔ انہیں پہلے ونڈے ٹیم سے باہر رکھا جاتا تھا، لیکن انہوں نے محنت کی اور وہ ونڈے کھلاڑی بن گئے۔ کئی لوگ انہیں ٹی-20 کھلاڑی نہیں سمجھتے تھے، لیکن اب وہ ٹی-20 کرکٹ میں بھی اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔ ایک دن میں سب کچھ نہیں بدلتا۔ سال 10-2009 میں وراٹ کوہلی کچھ نہیں تھے، لیکن اس کے بعد وراٹ کوہلی نے اپنی رفتار بدلی، اپنے کھیل اور فٹنس پر محنت کی‘۔

      بابر اعظم حال ہی میں سب سے تیزی سے 14 ونڈے سنچری لگانے والے کھلاڑی بنے ہیں۔
      بابر اعظم حال ہی میں سب سے تیزی سے 14 ونڈے سنچری لگانے والے کھلاڑی بنے ہیں۔


      واضح رہے کہ بابر اعظم حال ہی میں سب سے تیزی سے 14 ونڈے سنچری لگانے والے کھلاڑی بنے ہیں۔ بابر اعظم نے 14 ونڈے سنچری کے لئے 81 اننگ کھیلی ہیں۔ وہیں وراٹ کوہلی نے اس کے لئے 103 اننگیں کھیلی تھیں۔ بابر اعظم ٹسٹ میں 42.5 کی اوسط سے رن بناتے ہیں اور ونڈے میں ان کا اوسط 56.9 ہے۔ وہیں ٹی-20 میں بھی وہ فی اننگ 46.8 رن بناتے ہیں۔ وہیں دوسری طرف وراٹ کوہلی دنیا کے واحد کرکٹر ہیں، جن کا تینوں فارمیٹ میں پچاس سے زیادہ اوسط ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: