ہوم » نیوز » اسپورٹس

بڑی خبر: ہند-پاک کےدرمیان تین میچوں کی سیریز، اس طرح ہوگی پیسوں کی تقسیم، یہ ہے پورا معاملہ

ہندوستان اورپاکستان (India vs Pakistan) کے درمیان اس سیریزکو دبئی میں کرانےکی تجویز پیش کی گئی ہے اور اس کےلئےچارٹرڈ فلائٹ کا انتظام کیا جاسکتا ہے۔

  • Share this:
بڑی خبر: ہند-پاک کےدرمیان تین میچوں کی سیریز، اس طرح ہوگی پیسوں کی تقسیم، یہ ہے پورا معاملہ
شعیب اختر نے ہندوستان اور پاکستان کےدرمیان تین ونڈے میچوں کی سیریز کروانے کی تجویز رکھی ہے۔ فائل فوٹو

اس وقت پوری دنیا کورونا وائرس (Coronavirus) جیسی خطرناک وبا سے جدوجہد کر رہی ہے۔ ہر کوئی اپنی اپنی سطح پر مدد کررہا ہے۔ کھلاڑی اپنی جرسی، ٹرافی اور بلے وغیرہ کی نیلامی کرکے رقم جمع کر رہے ہیں تو کچھ اسپتال میں مدد کررہے ہیں۔ اسی درمیان پاکستان کے سابق تیزگیندباز شعیب اختر (Shoaib Akhtar) نےتجویز رکھی ہے کہ کورونا وائرس کے خلاف جنگ کےلئے رقم جمع کرنے کےلئے ہندوستان اور پاکستان (India vs Pakistan) کے درمیان تین ونڈے میچوں کی سیریز کرائی جائے۔ دراصل دونوں ہی ملکوں کے درمیان رشتے اچھے نہیں ہیں، جس کے سبب کئی سالوں سے دونوں ملکوں کے درمیان کوئی سیریز نہیں ہوئی۔ دونوں ٹیموں کا آمنا سامنا صرف آئی سی سی ایونٹ میں ہوتا ہے۔ ہندوستان پر 2008 میں دہشت گردانہ حملے کے بعد سے دونوں ممالک نے ایک دوسرے کے خلاف دوطرفہ سیریز نہیں کھیلی ہے۔ دونوں کا سامنا آئی سی سی ٹورنامنٹوں اور ایشیا کپ میں ہوا ہے۔


سیریز ہارنے پر بھی افسوس نہیں


شعیب اختر نے اسلام آباد سے پریس ٹرسٹ سے کہا کہ بحران کے اس دور میں وہ دونوں ملکوں کے درمیان تین میچوں کی سیریز کی تجویز رکھتے ہیں۔ پہلی بار اس سیریز کا نتیجہ کچھ بھی نکلے، دونوں ممالک میں سےکسی کےکرکٹ مداحوں کو افسوس نہیں ہوگا۔ انہوں نےکہا کہ وراٹ کوہلی سنچری لگاتے ہیں تو ہم خوش ہوں گے۔ بابر اعظم سنچری لگاتے ہیں تو آپ خوش ہوں گے۔ میچ کا نتیجہ جو بھی نکلے، دونوں ٹیموں کی جیت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ اس میچ کو کافی ناظرین ملیں گے۔ پہلی بار دونوں ملک ایک دوسرے کےلئےکھیلیں گے۔ اس سے جو بھی پیسہ ملے، وہ کورونا کےخلاف لڑائی کےلئے دونوں ملکوں میں برابر تقسیم کردیا جائے۔


ہندوستان اور پاکستان کے درمیان اس سیریز کو دبئی میں کروانے کی تجویز رکھی گئی ہے اور اس کے لئے چارٹرڈ فلائٹ کا انتظام کیا جاسکتا ہے۔
ہندوستان اور پاکستان کے درمیان اس سیریز کو دبئی میں کروانے کی تجویز رکھی گئی ہے اور اس کے لئے چارٹرڈ فلائٹ کا انتظام کیا جاسکتا ہے۔


انسانیت کی بات ہو، ملک اور مذہب کی نہیں

شعیب اخترنےکہا کہ اس وقت سبھی گھروں میں بیٹھے ہیں تو وہ یہ میچ دیکھیں گے۔ بھلے ہی ابھی نہیں، لیکن جب حالات سدھرنےلگے تو یہ میچ دبئی میں کھیلےجاسکتے ہیں۔ اس کےلئے چارٹرڈ فلائٹ کا انتظام کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نےکہا کہ اس سے دونوں ملکوں کے سیاسی تعلقات بھی بہتر ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ بحران کے اس دور میں دونوں ملکوں کو ایک دوسرے کی مدد کرنی چاہئے۔ اس عظیم گیند باز نےکہا کہ ہندوستان اگر 10 ہزار وینٹیلیٹر دیتا ہے تو پاکستان اسے ہمیشہ یاد رکھےگا۔ پاکستان تو صرف میچوں کی پیشکش کرسکتا ہے، باقی افسران کو طےکرنا ہے۔ پاکستان کے اسٹار کرکٹر شاہد آفریدی کی چیئریٹی کی مدد کی اپیل کرنے والے ہندوستانی کرکٹروں یوراج سنگھ اور ہربھجن سنگھ کی تنقیدکے بارے میں پوچھنے پر انہوں نےکہا کہ یہ غیرانسانی ہے۔ اس وقت ملک یا مذہب کی بات نہیں، انسانیت کی بات ہونی چاہئے۔

 
Published by: Nisar Ahmad
First published: Apr 08, 2020 08:43 PM IST