உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شعیب اختر نے کیوں ماری تھی سوربھ گانگولی کی پسلیوں پر گیند؟ سنائی سازش کی پوری کہانی

    ہندوستان پاکستان مقابلے سے متعلق ایک دلچسپ قصہ ویریندر سہواگ نے سنایا ہے۔ (Shoaib Akhtar instagram)

    ہندوستان پاکستان مقابلے سے متعلق ایک دلچسپ قصہ ویریندر سہواگ نے سنایا ہے۔ (Shoaib Akhtar instagram)

    شعیب اختر نے بتایا ہے کہ یہ اچانک نہیں ہوا تھا، بلکہ پاکستانی ٹیم نے گانگولی کو زخمی کرنے کی ہی پلاننگ کی تھی اور اس کی ذمہ داری انہیں سونپی گئی تھی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | Kolkata | Chennai | Lucknow
    • Share this:
      نئی دہلی: ہندوستان-پاکستان کی ٹیمیں جب بھی کرکٹ میدان پر آمنے سامنے ہوتی ہے، تو صرف کرکٹ کا کھیل ہی نہیں ہوتا ہے، بلکہ سالوں پرانے قصے کہانیاں بھی تازہ ہوجاتی ہیں۔ ایک بار پھر یہ دونوں ٹیمیں ایشیا کپ میں مدمقابل ہونے والی ہیں۔ مقابلہ 28 اگست کو دبئی میں ہوگا۔ ایسے میں اس ہائی وولٹیج مقابلے سے پہلے آپ کو 23 سال پرانی ایسی ہی ایک کہانی سناتے ہیں۔ جب پاکستانی ٹیم نے سوربھ گانگولی کی پسلیاں توڑنے کی پوری پلاننگ کر لی تھی۔

      یہ واقعہ ہے 1999 میں پاکستان کے ہندوستان دورے کا۔ اس دورے پر دونوں ممالک کے درمیان موہالی میں ایک مقابلہ ہوا تھا۔ اس میں شعیب اختر کی ایک شارٹ گیند سوربھ گانگولی کی پسلی میں لگ گئی تھی، جس کے بعد انہیں میدان سے باہر جانا پڑا تھا۔ اب شعیب اختر نے بتایا ہے کہ یہ اچانک نہیں ہوا تھا، بلکہ پاکستانی ٹیم نے گانگولی کو زخمی کرنے کی ہی پلاننگ کی تھی اور اس کی ذمہ داری انہیں سونپی گئی تھی۔
      شعیب اختر نے ایشیا کپ میں ہونے والے ہندوستان-پاکستان مقابلے سے متعلق اسٹار اسپورٹس کے خاص شو ‘Frenemies’ میں ویریندر سہواگ کو یہ کہانی سنائی۔ شعیب اختر نے کہا، ’ہندوستان کے خلاف میچ سے پہلے ہماری ٹیم میٹںگ ہوئی تھی، جس میں مجھے ٹیم منیجمنٹ نے کہا کہ آپ کو ہندوستانی بلے بازوں کے جسم پر گیند پھینکنی ہیں، جتنا ہوسکے، ان کے خلاف شارٹ گیند کا استعمال کرنا ہے۔ میں ہمیشہ ہی بلے بازوں کے سر اور پسلیوں پر ہی گیند کو ٹارگیٹ کرنے کی کوشش کرتا تھا۔ ہم نے گانگولی کی پسلیوں کو نشانہ بنانے کی پلاننگ کی تھی۔ ہم نے میچ سے پہلے ٹیم میٹنگ میں یہ طے کیا تھا کہ سوربھ گانگولی کی پسلیوں کو ٹارگیٹ کرنا ہے۔ مجھے ٹیم کے سینئر کھلاڑیوں کی طرف سے یہ حکم ملا تھا کہ مجھے ہندوستانی بلے بازوں کو باڈی لائن گیند بازی کرنی ہے۔


      ہندوستانی بلے بازوں کو شارٹ پچ گیند بازی کرنی تھی: شعیب

      شعیب اختر نے مزید کہا، ‘جب مجھے ٹیم کی طرف سے حکم ملا تو میں نے ان سے پوچھا کہ کیا مجھے انہیں آوٹ نہیں کرنا؟ اس کے جواب میں انہوں نے کہا، نہیں تمہارے پاس رفتار ہے، تو تمہیں بس بلے بازوں کو مارنا ہے۔ انہیں کیسے آوٹ کرنا ہے یہ ہم پر چھوڑ دو۔

      ’گانگولی کو پہلے ہی یہ کہانی سنا چکا ہوں‘

      اس کے جواب میں ویریندر سہواگ نے بھی مسکراتے ہوئے کہا، ’مجھے پورا یقین ہے کہ سوربھ گانگولی اس انٹرویو کو ضرور سن رہے ہوں گے‘۔ تب شعیب اختر نے سہواگ کو بتایا کہ وہ پہلے ہی گانگولی کو یہ بات بتا چکے ہیں۔ شعیب اختر نے مزید کہا، میں نے گانگولی کو تب بتا دیا تھا کہ ہمارا ارادہ تمہیں آوٹ کرنا نہیں تھا۔ ہمارا پلان تو بس تمہاری پسلیوں پر حملہ کرنا تھا اور میں نے اس لئے ایسی گیند بازی کی تھی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: