ہوم » نیوز » اسپورٹس

مہندر سنگھ دھونی سے متعلق بی سی سی آئی صدر سوربھ گانگولی نے کہا یہ بڑا انکشاف

بی سی سی آئی صدر سوربھ گانگولی نے کہا کہ دھونی میں بڑے شاٹس کھیلنے کی صلاحیت ہے لہذا انھیں بیٹنگ آرڈر میں اوپرلانا اور آزادانہ طور پر کھیلنے دینا ضروری تھا۔

  • Share this:
مہندر سنگھ دھونی سے متعلق بی سی سی آئی صدر سوربھ گانگولی نے کہا یہ بڑا انکشاف
مہندر سنگھ دھونی سے متعلق بی سی سی آئی صدر سوربھ گانگولی نے کہا یہ بڑا انکشاف

نئی دہلی: ہندوستانی ٹیم کے سابق کپتان اور ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) کے صدر سوربھ گانگولی نے کہا ہے کہ وہ جانتے تھے کہ ٹیم کے سابق وکٹ کیپر بلے باز مہندر سنگھ دھونی میں بڑے شاٹس لگانے کی صلاحیت ہے، اسی لئے انہوں نے اپنی کپتانی میں دھونی کو ٹاپ آرڈر میں اتارا تھا۔ اپنی کپتانی میں ٹیم کو دو ورلڈ کپ جتانے والے دھونی نے 15 اگست کو انٹرنیشنل کرکٹ سے سبکدوشی کا اعلان کیا تھا۔ سوربھ گانگولی نے کہا کہ دھونی میں بڑے شاٹس کھیلنے کی صلاحیت ہے لہذا انھیں بیٹنگ آرڈر میں اوپرلانا اور آزادانہ طور پر کھیلنے دینا ضروری تھا۔


سوربھ گانگولی نے کہا کہ انہوں نے 2005 میں چیلنجر ٹرافی کے دوران ممبئی میں انڈیا سینئر کی جانب سے کھیلتے ہوئے ٹاپ آرڈر میں دھونی کو کھلانے کا فیصلہ کیا تھا اور اس میچ میں دھونی نے 96 گیندوں پر ناقابل شکست 102 رن بنائے تھے اور انہوں نے ٹیم کو جیتنے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔ گنگولی نے اسپورٹس تک سے کہا کہ چیلنجر ٹرافی کے دوران دھونی میری ٹیم کے لئے کھیلے تھے اور سنچری بنا چکے تھے تب ہی مجھے ان کی قابلیت کا پتہ چلا۔ انہیں وشاکھاپٹنم میں تیسرے نمبر پر کھیلنے کا موقع ملا اور وہاں بھی سنچری بنائی۔ جب بھی انہیں زیادہ اوورز کھیلنے کا موقع ملا انہوں نے بڑے رن بنائے۔


 سوربھ گانگولی نے کہا کہ دھونی میں بڑے شاٹس کھیلنے کی صلاحیت ہے لہذا انھیں بیٹنگ آرڈر میں اوپرلانا اور آزادانہ طور پر کھیلنے دینا ضروری تھا۔
سوربھ گانگولی نے کہا کہ دھونی میں بڑے شاٹس کھیلنے کی صلاحیت ہے لہذا انھیں بیٹنگ آرڈر میں اوپرلانا اور آزادانہ طور پر کھیلنے دینا ضروری تھا۔


انہوں نے کہا کہ ایک کھلاڑی اس وقت بنتا ہے جب اسے صحیح آرڈر میں کھیلنے کے لئے بھیجا جائے۔ لوور آرڈر میں بیٹسمین کوکھلا کر آپ کوئی بڑا کھلاڑی نہیں بنا سکتے۔ میں نے ہمیشہ یقین کیا ہے کہ آپ ڈریسنگ روم کے اندر بیٹھ کر کسی کرکٹر کو بڑا کھلاڑی نہیں بنا سکتے۔

 سوربھ گانگولی نے کہا کہ دھونی کی صلاحیت خاص طور پر چھکے مارنا بہت کم تھا۔ اپنے کیریئر کے اختتام تک انہوں نے اپنا کھیل تبدیل کرلیا تھا۔ لیکن جب دھونی جوان تھے تو یہ ضروری تھا کہ انہیں آزادانہ طور پر کھیلنے کی اجازت دی جائے۔

سوربھ گانگولی نے کہا کہ دھونی کی صلاحیت خاص طور پر چھکے مارنا بہت کم تھا۔ اپنے کیریئر کے اختتام تک انہوں نے اپنا کھیل تبدیل کرلیا تھا۔ لیکن جب دھونی جوان تھے تو یہ ضروری تھا کہ انہیں آزادانہ طور پر کھیلنے کی اجازت دی جائے۔


سوربھ گانگولی نے کہا کہ دھونی کی صلاحیت خاص طور پر چھکے مارنا بہت کم تھا۔ اپنے کیریئر کے اختتام تک انہوں نے اپنا کھیل تبدیل کرلیا تھا۔ لیکن جب دھونی جوان تھے تو یہ ضروری تھا کہ انہیں آزادانہ طور پر کھیلنے کی اجازت دی جائے۔ قابل ذکر ہے کہ دھونی نے گنگولی کی قیادت میں بین الاقوامی سطح پر ڈیبیو کیا تھا۔ دھونی نے اپنے کیریئر میں 16 مرتبہ تیسرے نمبر پر کھیلا ہے اور اس پوزیشن پر اوسط 82.75 ہے۔ گنگولی نے کہا کہ جب میں ریٹائر ہوا تو میں نے کئی بار اپنے خیالات رکھے کہ دھونی کو ٹاپ آرڈر میں کھلانا چاہئے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Aug 25, 2020 02:16 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading