ہوم » نیوز » اسپورٹس

جنوبی افریقہ میں کرکٹ شائقین کے لئے آئی ایک اور بری خبر، بورڈ کے تمام ممبران مستعفی

کرکٹ جنوبی افریقہ (سی ایس اے) بورڈ کے باقی چار ممبران نے بھی استعفی دے دیا ہے۔ ایک روز قبل اتوار کے روز سی ایس اے کے قائم مقام صدر بیرس فورڈ ولیمز سمیت چھ ارکان نے اپنے عہدوں سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ گذشتہ روز مستعفی ہونے والے ممبران میں ڈونووین مے، ٹیبوگو سیکو، انجیلو کیرولین، جان موگودی اور ڈیوین دھرملنگم شامل ہیں، ان میں ولیمز بھی شامل ہیں۔

  • Share this:
جنوبی افریقہ میں کرکٹ شائقین کے لئے آئی ایک اور بری خبر، بورڈ کے تمام ممبران مستعفی
سی ایس اے بورڈ کے تمام ممبران مستعفی

جوہانسبرگ: کرکٹ جنوبی افریقہ (سی ایس اے) بورڈ کے باقی چار ممبران نے بھی استعفی دے دیا ہے۔ ایک روز قبل اتوار کے روز سی ایس اے کے قائم مقام صدر بیرس فورڈ ولیمز سمیت 6 ارکان نے اپنے عہدوں سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ گذشتہ روز مستعفی ہونے والے ممبران میں ڈونووین مے، ٹیبوگو سیکو، انجیلو کیرولین، جان موگودی اور ڈیوین دھرملنگم شامل ہیں، ان میں ولیمز بھی شامل ہیں۔ بورڈ کے باقی چار ممبران - جولا تھامے، ماریس شو مین ، یوجینیا کولا امائیف اور یووکجی میمانی - سیڈائل نے بھی پیر کو استعفی دے دیا۔

جمعرات کو جنوبی افریقہ کرکٹ کی اعلیٰ ترین فیصلہ سازی کونسل نے بورڈ کے تمام ممبروں سے استعفی دینے کو کہا۔ بورڈ کے تمام ممبران نے کونسل کے اس حکم کے بعد استعفیٰ دے دیا ہے۔ کونسل نے تمام بورڈ ممبران سے ملک میں کرکٹ کی حالت اور سی ایس اے کے بارے میں ہونے والے ایک اجلاس کے بعد استعفیٰ دینے کو کہا تھا۔ اس وقت بورڈ کے کسی بھی رکن نے استعفیٰ پیش نہیں کیا تھا اور سی ایس اے نے ایک بیان جاری کیا جس کی تصدیق کی گئی تھی۔ سی ایس اے نے آج ٹویٹ کیا کہ کونسل نے تمام بورڈ ممبران سے جنوبی افریقہ میں کرکٹ کے مفاد میں استعفی دینے کو کہا تھا۔ اب بورڈ کے تمام آزاد اور غیر آزاد ڈائریکٹرز نے استعفیٰ دے دیا ہے۔



جنوبی افریقہ کی حکومت نےکہا تھا کہ سینئر افسران کے ذریعہ سنگین بدتمیزی کے بعد وہ ملک میں کرکٹ کے قومی ادارے کے معاملوں میں مداخلت کا ارادہ رکھتی ہے۔
جنوبی افریقہ کی حکومت نےکہا تھا کہ سینئر افسران کے ذریعہ سنگین بدتمیزی کے بعد وہ ملک میں کرکٹ کے قومی ادارے کے معاملوں میں مداخلت کا ارادہ رکھتی ہے۔


اس سے پہلے خبر آئی تھی کہ جنوبی افریقہ پر بین الاقوامی کرکٹ سے پابندی کا خطرہ منڈلا رہا ہے۔ کیونکہ جنوبی افریقہ کی حکومت نےکہا تھا کہ سینئر افسران کے ذریعہ سنگین بدتمیزی کے بعد وہ ملک میں کرکٹ کے قومی ادارے کے معاملوں میں مداخلت کا ارادہ رکھتی ہے۔ وزیر کھیل ناتھی میتھیتھوا نے بیان میں کہا تھا کہ انہوں نے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کو اس قدم کی جانکاری دے دی ہے۔ آئی سی سی کا آئین سرکاری مداخلت کو ممنوع قرار دیتا ہے اور سزا کے لحاظ سے عام طور پر قومی کرکٹ بورڈ کے آزاد طور پر کام شروع کرنے تک ملک کی ٹیم کو بین الاقوامی میچوں میں کھیلنے سے پابندی عائد ہوجاتی ہے۔ جنوبی افریقہ حکومت اور کرکٹ جنوبی افریقہ (سی ایس اے) کے درمیان کشیدگی کرکٹ بورڈ کے معاملوں کی طویل وقت سے چلی آرہی جانچ کے سبب ہے۔ اس جانچ کے بعد اگست کو سی ایس اے کے سی او تھبانگ میروئی کو سنگین بدتمیزی کے الزام میں برخاست کردیا گیا تھا، لیکن کرکٹ جنوبی افریقہ نے آزادانہ جانچ کی رپورٹ کو عوامی کرنے سے انکار کردیا اور ساتھ ہی حکومت سے جڑے جنوبی افریقہ کھیل ایسوسی ایشن اور اولمپک کمیٹی کی سی ایس اے کے معاملات کی خود جانچ کرانے کی بھی مخالفت کی تھی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Oct 27, 2020 03:33 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading