உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ٹی-20 عالمی کپ: دھونی سے 4 سال پہلے ڈیبیو کرنے والا کھلاڑی پاکستان کو جتا رہا ہے میچ، مداح کہتے ہیں یہ بڑی بات

    ٹی-20 عالمی کپ: دھونی سے 4 سال پہلے ڈیبیو کرنے والا کھلاڑی پاکستان کو جتا رہا ہے میچ

    ٹی-20 عالمی کپ: دھونی سے 4 سال پہلے ڈیبیو کرنے والا کھلاڑی پاکستان کو جتا رہا ہے میچ

    T20 World Cup 2021: ٹی-20 عالمی کپ میں دو جیت کے ساتھ پاکستان کی ٹی-20 عالمی کپ کے سیمی فائنل میں جگہ تقریباً یقینی ہوگئی۔ اس ٹورنامنٹ میں پاکستان کی ٹیم سب سے متوازن نظر آرہی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ٹی-20 عالمی کپ (T20 World Cup 2021) میں کسی ایک ٹیم نے اپنی کارکردگی سے سب سے زیادہ حیران کیا ہے، تو وہ پاکستان ہے۔ پاکستان نے پہلے ٹورنا منٹ جیتنے کی مضبوط دعویدار مانی جارہی ہے۔ ٹیم انڈیا کو شکست دی اور پھر نیوزی لینڈ کو ایک دلچسپ مقابلے میں 5 وکٹ سے (PAK vs NZ T20 World cup 2021) شکست دی۔ دو جیت کے ساتھ پاکستان کی ٹی-20 عالمی کپ کے سیمی فائنل میں جگہ تقریباً یقینی ہوگئی۔ اس ٹورنامنٹ میں پاکستان کی ٹیم سب سے متوازن نظر آرہی ہے، جہاں اس کے پاس شاہین آفریدی(Shaheen Afridi)، حارث روف اور حسن علی (Hasan Ali) جیسے بہترین گیز گیند باز ہیں، تو وہیں بابر اعظم (Babar Azam)، محمد رضوان (Mohammad Rizwan) جیسے نوجوانوں کے علاوہ محمد حفیظ اور شعیب ملک (Shoaib Malik) جیسے تجربہ کار بلے باز بھی موجود ہیں۔

      گزشتہ میچ میں نیوزی لینڈ کے خلاف یہی تجربہ پاکستانی ٹیم کے کام آیا۔ 135 رنوں کے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے ایک وقت پاکستان نے 87 رنوں پر 5 وکٹ گنوا دیئے تھے۔ ٹیم مشکل میں نظر آرہی تھی۔ لگ رہا تھا کہ میچ پھنس جائے گا۔ پاکستان کو میچ میں آخری 30 گیندوں میں جیت کے لئے 44 رنوں کی ضرورت  تھی، لیکن 39 سال کے شعیب ملک ایک اینڈ پر ڈٹے رہے۔ وہ میچ کو آخری اوور تک لے جانے کی سوچ سے کھیل رہے تھے۔ اس لئے غیرضروری خطرہ نہیں اٹھائے۔ ان کی جگہ بڑے شاٹس کھیلنے کا کام آصف علی نے کیا۔

      آصف علی نے ٹم ساودی کی مسلسل 2 گیندوں پر چھکے لگاکر اور گیند کے فرق کو کم کیا۔ جب لگا کہ میچ اب پکڑ میں آگیا ہے، تو پھر شعیب ملک نے 18 ویں اوور میں اپنا گیئر بدلا۔ انہوں نے مچیل سینٹنر کے اس اوور میں ایک چھکا اور ایک چوکا لگاتے ہوئے کل 15 رن بنالئے۔ آخری 12 گیندوں میں پاکستان کو 9 رن کی ضرورت تھی، جسے شعیب ملک اور آصف علی کی جوڑی نے آسانی سے پورا کرلیا۔ ان دونوں کے درمیان چھٹے وکٹ کے لئے 23 گیندوں میں 48 رن کی پارٹنرشپ ہوئی۔

      دھونی سے 4 سال پہلے شعیب ملک نے ڈیبیو کیا

      شعیب ملک نے میچ میں زیادہ بڑی اننگ تو نہیں کھیلی، لیکن ان کے 20 گیندوں میں 26 رن لو اسکورنگ میں نتیجے بدلنے والے ثابت ہوئے۔ اسی وجہ سے پاکستانی مداح بھی انہیں ٹیم انڈیا کے سابق وکٹ کیپر بلے باز مہندر سنگھ دھونی (MS Dhoni) جیسا بیسٹ فنیشر مانتے ہیں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ دھونی اور شعیب ہم عمر ہیں۔ شعیب ملک نے 1999 جبکہ دھونی نے 2004 میں بین الاقوامی کرکٹ میں ڈیبیو کیا تھا۔ یعنی شعیب ملک نے سابق ہندوستانی کپتان سے 4 سال پہلے بین الاقوامی کرکٹ کھیلنا شروع کردیا تھا۔ 40 سال کے دھونی نے جہاں گزشتہ سال بین الاقوامی کرکٹ کو الوداع کہہ دیا تھا۔ وہیں 39 سال کے شعیب ملک اب بھی پاکستان کے لئے کھیل رہے ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: