உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ٹی -20 عالمی کپ: دبئی کے میدان پر پاکستان نہیں ہندوستان کا رہے گا بول بالا، جانیں کیسا رہے گا پچ کا مزاج؟

    ٹی -20 عالمی کپ: دبئی کے میدان پر پاکستان نہیں ہندوستان کا رہے گا بول بالا، جانیں کیسا رہے گا پچ کا مزاج؟

    ٹی -20 عالمی کپ: دبئی کے میدان پر پاکستان نہیں ہندوستان کا رہے گا بول بالا، جانیں کیسا رہے گا پچ کا مزاج؟

    India Vs Pakistan: دبئی میں ہندوستان کو چار میچ کھیلنے ہیں۔ حال ہی میں آئی پی ایل کے مقابلے کھیلنے کے بعد ہندوستانی کھلاڑی اس میدان سے اچھی طرح واقف ہیں۔ جبکہ گزشتہ 11 سال سے متحدہ عرب امارات پاکستان کا ہوم گراونڈ رہا ہے۔

    • Share this:
      دبئی: ٹی-20 عالمی کپ (ICC T20 World Cup) میں ہندوستان اپنی مہم کا آغاز اتوار سے کرے گا۔ پہلے میچ میں ہندوستان کا مقابلہ پاکستان (India Vs Pakistan) سے ہوگا۔ یہ مقابلہ دبئی کے میدان پر کھیلا جائے گا۔ خاص بات یہ ہے کہ ہندوستان کو اپنے گروپ اسٹیج کے 5 میں سے 4 میچ دبئی میں کھیلنا ہے۔ جبکہ افغانستان سے ایک واحد مقابلہ ابو ظہبی میں کھیلا جائے گا۔ واضح رہے کہ گزشتہ 11 سال سے ابو ظہبی پاکستان کا ہوم گراونڈ رہا ہے، لیکن حال کے دنوں میں ہندوستان کو بھی آئی پی ایل کے مقابلے کھیلنے کے سبب یہاں کا اچھا خاصا تجربہ ہوگیا ہے۔

      ہندوستان اور پاکستان کی ٹیمیں یہاں کی پچ سے اچھی طرح واقف ہے۔ ایسے میں دونوں ٹیموں کو حکمت عملی طے کرنے میں زیادہ مشکلات نہیں آئے گی۔ کیا ہے یہاں کے پچ کا مزاج اور کیا کہتے ہیں ریکارڈ، آئیے ایک نظر ڈالتے ہیں۔

      گیند باز یا بلے باز؟ کس کا رہے گا بول بالا

      گزشتہ کچھ سالوں کے ریکارڈ پر نظر ڈالیں تو یہاں پچ کا مزاج زیادہ نہیں بدلا ہے۔ کچھ پچیں دھیمی ہیں جبکہ کچھ پر پیس گیند بازوں کو مدد ملتی رہی ہے۔ گزشتہ دو آئی پی ایل کے دوران یہاں کا اوسط اسکور 160-150 کے درمیان رہا ہے۔ تیز گیند باز یہاں زیادہ کامیاب رہے ہیں۔ ہر ایک وکٹ کے لئے یہاں تیز گیند باز 27 رن خرچ کرتے ہیں۔ جبکہ اسپنرس ایک وکٹ کے لئے اوسط 32 رن دیتے ہیں۔ ایسے میں یہاں ہندوستان اور پاکستان کی ٹیمیں 3-3 تیز گیند بازوں کے ساتھ اتر سکتی ہے۔

      یہ پچ آسان نہیں

      دبئی میں پچ کے لوکیشن کو لے کر بھی ہمیشہ چرچا ہوتی ہے۔ یہاں پچ اسکوائر کے قریب ہے۔ ایسے میں ایک طرف کافی چھوٹی باونڈری ہے، لہٰذا بلے باز اسی علاقے پر نشانہ سادھنے کی کوشش کرتے ہیں۔ ایسے میں یہاں گیند بازی کرنا آسان نہیں ہوتا ہے۔ اسپنروں کو کس اینڈ سے گیند بازی کے مورچے پر لگایا جائے، کپتان کے لئے یہ بھی سردردی بنی رہتی ہے۔ اس کے علاوہ یہاں ہر ٹیم یہ چاہتی ہے کہ بیٹنگ کے مورچے پر رائٹ اور لیفٹ کا کامبینیشن بنا رہے تاکہ چھوٹی باونڈری پر نشانہ سادھا جاسکے۔

      ٹاس کا رول اہم

      اس بار عالمی کپ میں ٹاس کا کافی اہم رہنے والا ہے۔ دراصل اس وقت ابو ظہبی میں موسم کا مزاج بدل رہا ہے۔ گرمی کم پڑ رہی ہے اور شام کو شبنم گرنے سے میدان کے حالات تھوڑے بدل رہے ہیں۔ سال 2020 میں آئی پی ایل کے مقابلے کے پہلے ہاف میں گرمی زیادہ تھی تو ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے پر 77 فیصد میچوں میں جیت ملی تھی، لیکن دوسرے ہاف میں 77 فیصد میچوں میں بعد میں بلے بازی کرنے والی ٹیموں کو جیت ملی۔

      پچ کے مزاج سے ہندوستان واقف

      دبئی میں ہندوستان کو چار میچ کھیلنے ہیں۔ حال ہی میں آئی پی ایل کے مقابلے کھیلنے کے بعد ہندوستانی کھلاڑی اس میدان سے اچھی طرح واقف ہیں۔ کپتان وراٹ کوہلی کے پاس ہر طرح کی حکمت عملی تیار کرنے کے لئے کھلاڑیوں کی فوج ہے۔ ایسے میں ٹیم انڈیا کو پچ کے مزاج کے لحاظ سے پلیئنگ الیون تیار کرنے میں زیادہ مشکل نہیں ہوگی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: