ہوم » نیوز » اسپورٹس

وزارت کھیل نے ہندوستان کے سات ریاستوں میں 143 ’کھیلو انڈیا سینٹر‘ کھولنے کی منظوری دی

وزارت کھیل کی جانب سے پورے ملک میں زمینی طور پر کھیل کے بنیادی ڈھانچے کی دستیابی یقینی بنانے کے لیے ریاستی حکومتوں کے ساتھ مل کر کھیلو انڈیا سینٹر شروع کیے گئے ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: May 25, 2021 09:13 PM IST
  • Share this:
وزارت کھیل نے ہندوستان کے سات ریاستوں میں 143 ’کھیلو انڈیا سینٹر‘ کھولنے کی منظوری دی
وزارت کھیل کی جانب سے پورے ملک میں زمینی طور پر کھیل کے بنیادی ڈھانچے کی دستیابی یقینی بنانے کے لیے ریاستی حکومتوں کے ساتھ مل کر کھیلو انڈیا سینٹر شروع کیے گئے ہیں۔

نئی دہلی: وزارت کھیل نے 14.30 کروڑ روپیے کے کل بجٹ تخمینے کے ساتھ سات ریاستوں میں کل 143 کروڑ روپیے 'کھیلو انڈیا سینٹر' کو دیے ہیں۔ ان مراکز میں ایک ایک اسپیشل کھیل کی ٹریننگ دی جائے گی۔ ان ریاستوں میں مہاراشٹر، میزورم، گوا، کرناٹک، مدھیہ پردیش، اروناچل پردیش اور منی پور شامل ہیں۔

ریاستوں کے مطابق تقسیم اس طرح سے ہے۔

مہاراشٹر۔ 30 اضلاع میں 3.60 کروڑ روپیے کے بجٹ تخمینے کے ساتھ 36 کھیلو انڈیا سینٹر کا آغاز کرنا۔

میزورم - ضلع کولاسِب میں 20 لاکھ روپیے کے بجٹ تخمینے کے ساتھ دو کھیلو انڈیا سینٹر کھولنا۔

اروناچل پردیش۔ 26 اضلاع میں 4.12 کروڑ بجٹ تخمینے کے ساتھ 52 کھیلو انڈیا سینٹر شروع کرنا۔

مدھیہ پردیش۔40 لاکھ بجٹ تخمینے کے ساتھچار کھیلو انڈیا سینٹر شروع کرنا۔
کرناٹک۔ 3.10 کروڑ روپیے کے بجٹ تخمینے کے ساتھ 31 کھیلو انڈیا سینٹر کھولنا۔
منی پور۔ 1.60 کروڑ روپے کے بجٹ تخمینے کے ساتھ 16 کھیلو انڈیا سینٹر شروع کرنا۔
گوا۔ 20 لاکھ بجٹ تخمینے کے ساتھ 2 کھیلو انڈیا سنٹر کھولنا۔
وزارت کھیل کی جانب سے پورے ملک میں زمینی طور پر کھیل کے بنیادی ڈھانچے کی دستیابی یقینی بنانے کے لیے ریاستی حکومتوں کے ساتھ مل کر کھیلو انڈیا سینٹر شروع کیے گئے ہیں۔ اس فیصلے کے بارے میں وزیر کھیل کرن ریجوجو  (Sports Minister Kiren Rijiju) نے کہا،’ہندوستان کو 2028 میں ہونے والے اولمپک کھیلوں میں ٹاپ 10 ممالک میں شامل کرنے کی ہماری کوشش ہے۔ اس ہدف کو پانے کے لیے ہمیں کم عمری سے ہی بڑی تعداد میں ہنرمند کھلاڑیوں کی شناخت کرنے اور انھیں ٹریننگ دینے کی ضرورت ہے۔ ضلع سطحی کھیلو انڈیا سینٹر میں اچھے ٹرینر اور آلات سہولیات کی دستیابی کے ساتھ، مجھے یقین ہے کہ ہم صحیح کھیل کے لیے اور صحیح وقت پر صحیح بچوں کو ڈھونڈنے کے اہل ہوں گے‘۔
جون 2020 میں، وزارت کھیل نے 4 سال کی مدت میں 1،000 نئے کھیلو انڈیا سینٹر کھولنے کا منصوبہ بنایا تھا جس میں ملک کے ہر ضلع میں کم سے کم ایک کھیلو انڈیا سینٹر ہوگا۔ اس سے قبل کئی ریاستوں میں 217 کھیلو انڈیا کے سینٹر کھولے گئے تھے تاہم یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ شمال مشرقی ریاستوں‘ جموں و کشمیر، انڈمان اینڈ نیکوبار، لکشدیپ اور لداخ کے اضلاع میں استثناء کے طور پر ہر ضلع میں 2 کھیلو انڈیا سینٹر ہوں گے۔

متعلقہ ریاستی حکومتوں کو اب ان تمام سینٹر کے لیے سابق چیمپیئن کھلاڑیوں کی تقرری کرنی ہوگی۔ نچلی سطح پر ملک میں کھیلوں کے انفراسٹرکچر کو مستحکم کرنے کے حکومتی وژن کے ایک حصے کے طور پر، ایک کم لاگت، کھیلوں کی تربیت کا ایک مؤثر فریم ورک تشکیل دیا گیا ہے جس میں سابق چیمپیئن کھلاڑی نوجوانوں کے لیے ٹرینر اور صلاح کار بنیں گے۔ یہ تربیت دہندگان خود مختار طور پر کھیلوں کی تربیت فراہم کر رہے ہیں اور اپنی زندگی گزار رہے ہیں۔
مالیاتی تعاون کا استمعال ٹرینر کے طور پر سابق چیمپئن ایتھلیٹوں کی محنت، معاون اسٹاف، آلات کی خرید، کھیل کٹ، قابل استعمال اشیا، مقابلون اور انعقاد میں حصہ داری کے لیے کیا جائے گا۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 25, 2021 09:13 PM IST