உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ڈیجیٹل ہیلتھ مشن کے تحت منفرد ہیلتھ اکاؤنٹس کو ABHA کا نام دیا گیا پی ایم مودی یوم جمہوریہ پر اعلان کریں گے

    آیوشمان بھارت ڈیجیٹل مشن (ABDM) کے تحت شرکت کو بڑھانے کے مقصد سے ایک اسکیم جو ہندوستانیوں کو ڈیجیٹل ہیلتھ ریکارڈ بنانے اور ان تک رسائی کے قابل بنائے گی، حکومت ڈیجیٹل ہیلتھ اکاؤنٹس کو ABHA کہنے کا منصوبہ بنا رہی ہے

    آیوشمان بھارت ڈیجیٹل مشن (ABDM) کے تحت شرکت کو بڑھانے کے مقصد سے ایک اسکیم جو ہندوستانیوں کو ڈیجیٹل ہیلتھ ریکارڈ بنانے اور ان تک رسائی کے قابل بنائے گی، حکومت ڈیجیٹل ہیلتھ اکاؤنٹس کو ABHA کہنے کا منصوبہ بنا رہی ہے

    آیوشمان بھارت ڈیجیٹل مشن (ABDM) کے تحت شرکت کو بڑھانے کے مقصد سے ایک اسکیم جو ہندوستانیوں کو ڈیجیٹل ہیلتھ ریکارڈ بنانے اور ان تک رسائی کے قابل بنائے گی، حکومت ڈیجیٹل ہیلتھ اکاؤنٹس کو ABHA کہنے کا منصوبہ بنا رہی ہے

    • Share this:
      وزیر اعظم نریندر مودی سے توقع ہے کہ وہ عوام کو آروگیہ بھارت ہیلتھ اکاؤنٹس یعنی ABHA بنانے کے لیے اپنی آنے والی یوم جمہوریہ کی تقریر میں اعلان کریں گے آیوشمان بھارت ڈیجیٹل مشن (ABDM) کے تحت شرکت کو بڑھانے کے مقصد سے ایک اسکیم جو ہندوستانیوں کو ڈیجیٹل ہیلتھ ریکارڈ بنانے اور ان تک رسائی کے قابل بنائے گی، حکومت ڈیجیٹل ہیلتھ اکاؤنٹس کو ABHA کہنے کا منصوبہ بنا رہی ہے، اس امید کے ساتھ کہ یہ نام عام لوگوں کے لیے بھی مددگار ثابت ہوگا۔

      اس مشن کے تحت ہر ہندوستانی کو 14 ہندسوں کا ایک منفرد صحت کی شناخت (ID) نمبر ملے گا - ہر ہندوستانی کے لیے ذاتی صحت کی شناخت، ڈاکٹروں اور صحت کی سہولیات اور ذاتی ریکارڈ کے لیے شناخت کنندہ کے ساتھ ایک ڈیجیٹل ہیلتھ ایکو سسٹم بنائے گا۔

      اس پیشرفت سے واقف سرکاری اہلکار نے نیوز 18 ڈاٹ کام کو بتایا کہ وزیر اعظم کی جانب سے یہ اعلان متوقع ہے کہ اسکیم کے تحت کھاتوں کو آروگیہ بھارت ہیلتھ اکاؤنٹس (ABHA) کہا جائے گا۔ اے بی ایچ اے ڈیجیٹل ہیلتھ اکاؤنٹس کے بجائے عام آدمی کے ساتھ زیادہ فائدہ مند ہوگا۔ یہ منصوبہ بندی اپنے آخری مراحل میں ہے۔ تاہم وزیر اعظم کا دفتر (PMO) اس اعلان پر حتمی فیصلہ کرے گا۔

      نریندر مودی حکومت کی فلیگ شپ اسکیم کا تصور یونیورسل ہیلتھ کوریج کی طرف پہلا قدم ہے۔ اس اسکیم کو پی ایم مودی نے 27 ستمبر کو قومی سطح پر شروع کیا تھا اور اس کا پائلٹ بھی پی ایم نے 15 اگست 2020 کو شروع کیا تھا۔

      سال 2020 میں لانچ ہونے کے بعد سے 6 جنوری تک تقریباً 15 کروڑ ہیلتھ آئی ڈیز بنائی جا چکی ہیں۔ تقریباً 7400 ڈاکٹروں کے ساتھ اس سکیم کے ساتھ 15,000 سے زیادہ صحت کی سہولیات کو رجسٹر کیا گیا ہے۔ سرکاری اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ 2 لاکھ سے زیادہ ہیلتھ ریکارڈ ایپس ڈاؤن لوڈ کی جا چکی ہیں۔

      اس اسکیم کو ایک رضاکارانہ پروگرام رہنے کا منصوبہ بنایا گیا ہے جس میں شہریوں کو اپنی ڈیجیٹل ہیلتھ آئی ڈی بنانے اور اپنے میڈیکل ریکارڈ کو لنک کرنے کا انتخاب دیا گیا ہے۔ ہیلتھ آئی ڈی یا تو آدھار کارڈ، ڈرائیونگ لائسنس یا موبائل نمبر کا استعمال کرتے ہوئے بنایا جا سکتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: