ہوم » نیوز » اسپورٹس

بم دھماکے میں گئی روی شاستری کی بہن کی جان، طیارے میں کیا گیا تھا دھماکہ!

ٹیم انڈیا کے ہیڈ کوچ روی شاستری اپنے کھیل ، کرکٹ کمنٹری اور مثبت سوچ کے لئے جانے جاتے ہیں۔ روی شاستری اکثر کیمرے میں انتہائی جذباتی انداز میں نظر آتے ہیں۔

  • Share this:
بم دھماکے میں گئی روی شاستری کی بہن کی جان، طیارے میں کیا گیا تھا دھماکہ!
ٹیم انڈیا کے ہیڈ کوچ روی شاستری اپنے کھیل ، کرکٹ کمنٹری اور مثبت سوچ کے لئے جانے جاتے ہیں۔ روی شاستری اکثر کیمرے میں انتہائی جذباتی انداز میں نظر آتے ہیں۔

ٹیم انڈیا کے ہیڈ کوچ روی شاستری اپنے کھیل ، کرکٹ کمنٹری اور مثبت سوچ کے لئے جانے جاتے ہیں۔  روی شاستری اکثر کیمرے میں انتہائی جذباتی انداز میں نظر آتے ہیں۔  لیکن بہت ہی کم لوگ جانتے ہیں کہ روی شاستری کو اپنی زندگی میں ایسی تکلیف کا سامنا کرنا پڑا ہے ، جس سے وہ صرف کھیال سے کانپ اٹھے گا۔  روی شاستری نے بم دھماکے میں اپنے کزن سے کھویا ہے ، جو خود ہندوستان کی سوئمنگ ٹیم کے کپتان تھی۔


روی شاستری کی چچیری بہن بم دھماکے میں ہوئی ہلاک


روی شاستری کے چچیری بہن کا نام مریدولا شاستری (Mridula Shastri) تھا ، جو خود ایک بہترین کھلاڑی تھی۔ مریدولا شاستری ہندوستانی سوئمنگ ٹیم کی کپتان تھیں اور وہ واٹر پولو کھلاڑی بھی تھیں۔ مریدولا نے 1982 کے ایشین گیمز میں بھی حصہ لیا تھا۔ لیکن 6 سال کے بعد ، وہ ایک دہشت گرد واقعے میں اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھی۔ مریدولا 1988 میں اسکاٹ لینڈ میں ہوئے ایک دھماکے میں اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھیں۔ ہم آپ کو بتادیں کہ 32 سال قبل لاکربی میں پان 103 طیارے میں بم دھماکا ہوا تھا جس میں روی شاستری کی کزن مریدولا بھی سوار تھی۔


1988 میں لارکبی شہر کے ٹھیک اوپر پین ایم کے ایک جنبو جیٹ طیارہ (Pan Am 103 bombing) میں دھماکہ ہوا تھا اور اس کا ملبہ شہر کے اوپر آگرا تھا۔ طیارے پر سوار سبھی 259 نسافروں نے اس دھماکے میں اپنی جان گنوادی تھی۔ اس دھماکے کیلئے لیبیا کو ذمہ دار ٹھہرایا گیا تھا۔ اس معاملے میں عبدالباسط علی المیگراہی قصوروار پایاگیاتھا لیکن سال 2009 میں کینسر سے متاثر پائے جانے پر ہمدردی کی بنیاد پر اسے رہا کردیا گیا۔ 

بتادیں کہ چچیری بہن کی موت کے بعد روی شاستری ویسٹ انڈیز دورے پر گئے تھے جہاں ان کا مظاہرہ کچھ خاص نہیں رہاتھا۔ 21  دسمبر 1988  کو ہوئے اس بم دھماکے کے بعد اگللے ایک سال تک روی شاستری بلے سے فلاپ رہے۔ 1989  میں انہوں نے 27.83  کے اوسط سے 334  رن ہی بنائے۔ ونڈے میں تو وہ 13 اننگز میں محض 14.25  کے اوسط سے 171  رن ہی بناسکے۔ پورے سال ان کے بلے سے ایک بھی سنچری اور نصف سنچری نہیں نکلی۔
First published: May 28, 2020 11:22 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading