உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    U-19 World Cup: ٹیم انڈیاکی کامیابی میں اہم رول اداکرنےوالےشیخ رشیدکون ہیں؟ رقمی انعامات کی برسات پرکہا’میں نےاتنی رقم اب تک نہیں دیکھی‘

    رشید نے بنگلہ دیش کے خلاف کوارٹر فائنل میں کم اسکور کرنے والے لیکن زیادہ شدت کے تعاقب میں 26 رنز بنائے اور آسٹریلیا کے خلاف سیمی فائنل میں اچھی رفتار سے 94 رنز کی اننگز کھیلی ۔

    رشید نے بنگلہ دیش کے خلاف کوارٹر فائنل میں کم اسکور کرنے والے لیکن زیادہ شدت کے تعاقب میں 26 رنز بنائے اور آسٹریلیا کے خلاف سیمی فائنل میں اچھی رفتار سے 94 رنز کی اننگز کھیلی ۔

    رشید نے بنگلہ دیش کے خلاف کوارٹر فائنل میں کم اسکور کرنے والے لیکن زیادہ شدت کے تعاقب میں 26 رنز بنائے اور آسٹریلیا کے خلاف سیمی فائنل میں اچھی رفتار سے 94 رنز کی اننگز کھیلی ۔

    • Share this:
      آندھرا کرکٹ ایسوسی ایشن (ACA) کے اراکین نے ہندوستانی کرکٹ ٹیم (انڈر 19) کے نائب کپتان شیخ رشید (Shaik Rasheed) کی انگلینڈ کے خلاف انڈر 19 ورلڈ کپ کے فائنل میچ میں شاندار مظاہرہ کرنے پر ان کی تعریف کی۔ اس سے قبل رشید نے آسٹریلیا کے خلاف سیمی فائنل میں 94 رنز بنائے تھے۔

      گنٹور کے شیخ رشید کو مبارکباد دیتے ہوئے اے سی اے کے صدر پی سرتھ چندر ریڈی (P. Sarath Chandra Reddy) نے کہا کہ ایسوسی ایشن اپنی حمایت جاری رکھے گی اور ان کی خواہش ہے کہ وہ آنے والے دنوں میں ہندوستانی مردوں کی ٹیم کا حصہ بنے۔

      ’’پراعتماد اور ذہنی طور پر مضبوط کھلاڑی‘‘:

      سابق کرکٹر اور کرکٹ آپریشنز کے ڈائریکٹر اے سی اے وائی وینوگوپالا نے کہا کہ شیخ رشید ایک پراعتماد اور ذہنی طور پر مضبوط کھلاڑی ہے۔ ان کا مستقبل بہت روشن ہے اور وہ مستقبل میں ہندوستان کے لیے کھیلنے کے لیے سب سے ذہین کھلاڑیوں میں سے ایک ہوں گے۔ آندھرا کرکٹ اسوسی ایشن (اے سی اے) کی جانب سے خزانچی ایس آر گوپی نادھ ریڈی نے نوجوان کرکٹر کو ان کے کارنامے پر 10 لاکھ روپے کے نقد انعام کا اعلان کیا۔ وہیں بی سی سی آئی نے ٹیم میں شامل تمام کھلاڑیوں کو چالیس چالیس لاکھ روپیے انعام دینے کا اعلان کیا۔ شیخ رشید نے اس موقع پر کہا کہ میں نے اتنی رقم اب تک نہیں دیکھی ہے۔


      شیخ رشید نے سال 2022 کے انڈر 19 ورلڈ کپ کے دوران ہندوستان کی کامیابی میں نمایاں کردار ادا کیا۔ انھوں نے کہا ہے کہ ٹائٹل جیتنے کے بعد چار چاند لگا چکے ہیں اور یہ جیت کھلاڑیوں اور کوچز کے درمیان تعلق کو خراج تحسین پیش کرتی ہے۔ بلے باز نے ٹھوس مزاج کا مظاہرہ کیا اور ورلڈ کپ میں تینوں ناک آؤٹ گیمز میں ہندوستانی ٹیم کے لیے اہم اننگز کھیلی۔


      کھیل کو بہتر کرنے کی مزید ضرورت ہے:

      رشید نے کریک بز کو بتایا کہ ’ہم نے انڈر 19 ورلڈ کپ جیتا ہے۔ یہ جیت کھلاڑیوں اور کوچز کے درمیان تعلق کو خراج تحسین پیش کرتی ہے جنہوں نے اس بات کو یقینی بنایا کہ ہم یہاں (کیریبین میں) ایک خاندان کی طرح رہیں۔ مجھے اپنے کھیل کو بہتر کرنے کی ضرورت ہے اور میں اس پر کام کروں گا۔

      رشید نے بنگلہ دیش کے خلاف کوارٹر فائنل میں کم اسکور کرنے والے لیکن زیادہ شدت کے تعاقب میں 26 رنز بنائے اور آسٹریلیا کے خلاف سیمی فائنل میں اچھی رفتار سے 94 رنز کی اننگز کھیلی اور پھر میچ میں ٹھوس 50 رنز بنا کر میچ کو ترتیب دیا۔ انگلینڈ کے خلاف فائنل تینوں دستکیں وکٹوں کے ابتدائی نقصان کے بعد آئیں۔ رشید نے اس مشکل وقت کو بھی یاد کیا جب انھوں نے ٹورنامنٹ کے دوران کووڈ۔19 کے لئے مثبت تجربہ کیا۔ انہوں نے اس مشکل مرحلے میں کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی کرنے پر سپورٹ اسٹاف کا شکریہ ادا کیا۔


      مختصر مدت کے لیے ناامیدی لیکن بڑی کامیابی:

      انھوں نے کہا کہ میں نے کبھی نہیں سوچا تھا کہ مجھے ٹورنامنٹ میں ایک اور موقع ملے گا۔ میں نے ٹورنامنٹ میں مزید حصہ لینے کی امید چھوڑ دی تھی۔ باقاعدگی سے جانچ اور 15 دن کا قرنطینہ کیا اور میں نے سوچا کہ ٹورنامنٹ میرے لئے ختم ہو گیا ہے۔ بلے باز نے اس وقت کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ جب ہندوستانی کیمپ کووڈ 19 سے متاثر ہوا تھا، جس میں وہ خود بھی شامل تھے۔ جس کے بعد نصف درجن کھلاڑیوں کو الگ تھلگ کرنے پر مجبور کیا گیا تھا۔

      ان کا کہنا ہے کہ اس مرحلے پر معاون عملے نے ہماری اچھی طرح مدد و حمایت کی اور ہمیں حوصلہ دیا۔ ہم تنہائی میں تھے اور وہ باقاعدگی سے ویڈیو کالنگ کرتے تھے اور ہمیں سمجھانے کی کوشش کرتے تھے کہ اسے ایک مختصر چوٹ کے وقفے کے طور پر سمجھا جائے نہ کہ کووڈ کی وجہ سے بڑا خلل۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: