உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Exclusive: جنوبی افریقہ سے کیوں جیت سکتا ہے ہندوستان، ظہیر خان نے بتائی ٹیم انڈیا کی سب سے بڑی خوبی

    ظہیر خان کا ماننا ہے کہ  ٹیم انڈیا کے تیز گیند باز جنوبی افریقہ میں خوب انجوائے کریں گے۔ (AFP)

    ظہیر خان کا ماننا ہے کہ ٹیم انڈیا کے تیز گیند باز جنوبی افریقہ میں خوب انجوائے کریں گے۔ (AFP)

    India vs South Africa: ہندوستان اور جنوبی افریقہ کے درمیان 26 دسمبر سے ٹسٹ سیریز شروع ہو رہی ہے۔ جنوبی افریقہ (South Africa) ایک ایسا ناقابل تسخیر قلعہ ہے، جسے فتح کرنے کے لئے ہندوستان 30 سالوں سے کوششیں کر رہا ہے، لیکن کامیابی نہیں مل رہی ہے۔ کپتان محمد اظہرالدین سے لے کر وراٹ کوہلی (Virat Kohli) تک سب نے کوشش کی، لیکن کامیابی نہیں ملی۔ ظہیر خان  (Zaheer Khan) نے اس بارے میں نیوز18 ہندی سے کھل کر باتیں کیں اور تفصیل سے بتایا کہ ہندوستان جیت کا دعویدار کیوں ہے؟ ہندوستانی ٹیم (Team India) کی سب سے بڑی خوبی کیا ہے۔ حکمت عملی کیا ہونی چاہئے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: جنوبی افریقہ (South Africa) ایک ایسا ناقابل تسخیر قلعہ ہے، جسے فتح کرنے کے لئے ہندوستان 30 سالوں سے کوششیں کر رہا ہے، لیکن کامیابی نہیں مل رہی ہے۔ کپتان محمد اظہرالدین سے لے کر وراٹ کوہلی (Virat Kohli) تک سب نے کوشش کی، لیکن ہر بار ڈھاک کے تین پات۔ ہندوستان کو جنوبی افریقہ (India vs South Africa) دورے پر سات کوششوں میں چھ میں شکست کا سامنا کرنا پڑا اور ایک بار ڈرا سے اکتفا کرنا پڑا تو کیا اس بار کامیابی ملے گی؟ ظہیر خان  (Zaheer Khan) نے اس بارے میں نیوز18 ہندی سے کھل کر باتیں کیں اور تفصیل سے بتایا کہ ہندوستان جیت کا دعویدار کیوں ہے؟ ہندوستانی ٹیم (Team India) کی سب سے بڑی خوبی کیا ہے۔ حکمت عملی کیا ہونی چاہئے۔

      سوال: کیا ہندوستانی ٹیم جنوبی افریقہ میں ٹسٹ سیریز جیت سکتی ہے؟

      ہندوستانی ٹیم کے پاس بہت اچھا موقع ہے۔ ہندوستانی ٹیم تسلسل کے ساتھ اچھا کھیل رہی ہے۔ وہ الگ الگ حالات میں بہترین کھیل دکھا رہی ہے۔ آپ دیکھیں گے کہ اس بار بھی ایسا ہی دیکھنے کو ملے گا۔ خاص طور پر جنوبی افریقہ میں ہندوستانی گیند باز اچھی کارکردگی کرتے ہوئے نظر آئیں گے۔

      سوال: ہندوستان کی موجودہ ٹیم کی سب سے بڑی خوبی کیا ہے؟

      گیند بازی ہندوستانی ٹیم کی سب سے بڑی طاقت ہوسکتی ہے۔ جنوبی افریقہ کی پچوں پر تیز گیند بازوں کے لئے ہمیشہ مدد ہوتی ہے۔ ہندوستانی گیند باز انجوائے کریں گے۔ ہندوستانی ٹیم میں ایسے گیندباز ہیں، جو جنوبی افریقی بلے بازوں کو پریشان کرتے ہوئے نظر آئیں گے۔ ہندوستانی ٹیم کی سب سے بڑی طاقت یہ ہے کہ اس کے پاس ایسی گیند بازی ہے، جو 20 وکٹ لینے کا دم خم رکھتی ہے۔

      سوال: گزشتہ 5 سال میں ہم نے کئی بار دیکھا ہے کہ ہمارے گیند باز تو وکٹ حاصل کرلیتے ہیں، لیکن بلے باز جدوجہد کرتے ہوئے نظر آتے ہیں۔ کہیں بلے بازی ہماری کمزوری تو نہیں بن جائے گی؟

      نہیں، آپ یہ تو نہیں کہہ سکتے کہ بلے بازی کمزوری بن سکتی ہے۔ کیونکہ آپ جیت رہے ہیں، جب آپ جیت رہے ہو تو جیتنے کے لئے جتنے رن ضروری ہیں۔ وہ بھی بنا رہے ہو۔ میں اسے اسی طریقے سے دیکھتا ہوں۔ اوور آل یہ ٹیم ورک ہے اور ہم جیت رہے ہیں۔

      وراٹ کوہلی، چتیشور پجارا، اجنکیا رہانے کے رہتے بھی مڈل آرڈر کے بار بار لڑکھڑانے پر کیا کہیں گے؟

      جب آپ مڈل آرڈر کی بات کر رہے ہو تو وہ حقیقت ہیں۔ آپ اسے اس طریقے سے دیکھ سکتے ہیں، لیکن میں کہوں گا کہ آپ نے بطور ٹیم کارکردگی اچھی ہے تو پھر مڈل آرڈر پر اتنا زور دینے کی ضرورت نہیں ہے یا ان پر دباو بنانے کی ضرورت نہیں ہے۔

      لیکن ہم نے آسٹریلیا سے لے کر انگلینڈ دورے تک بار بار دیکھا کہ لور آرڈر نے میچ سنبھالا؟ ہم اہم بلے بازوں کی ذمہ داری کتنی بار نچلے آرڈر کے بھروسے چھوڑ سکتے ہیں؟

      دیکھئے جیتنے کی بھی ایک عادت ہوتی ہے۔ آپ نے جو لور آرڈر کی بلے بازی کا ذکر کیا، وہ اہم ہے۔ آپ کو یہ بھروسہ ہونا چاہئے کہ آپ جیت سکتے ہو۔ اسی بھروسے کے سبب ہی نچلے آرڈر کی بلے باز بھی اچھی کارکردگی کرجاتے ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: