உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بڑی بہن کے بوائے فرینڈ پر آیا چھوٹی بہن کا دل، پھر ہوا کچھ ایسا .... سبھی کے اڑ گئے ہوش!

    بڑی بہن کے بوائے فرینڈ پر آیا چھوٹی بہن کا دل، پھر اٹھایا ایسا قدم، سبھی کے اڑ گئے ہوش!

    بڑی بہن کے بوائے فرینڈ پر آیا چھوٹی بہن کا دل، پھر اٹھایا ایسا قدم، سبھی کے اڑ گئے ہوش!

    Viral News: کئی مرتبہ پیار میں لوگ اپنے خون کو بھی بھول جاتے ہیں ۔ ایک ایسا ہی واقعہ امریکہ کے فلوریڈا میں پیش آیا ہے ۔ بڑی بہن نے چھوٹی بہن کا اس لئے قتل کردیا کیونہ وہ اس کے بوائے فرینڈ پر ڈورے ڈالنے لگی تھی ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • interna, Indiaamericaamericaamerica
    • Share this:
      کئی مرتبہ پیار میں لوگ اپنے خون کو بھی بھول جاتے ہیں ۔ ایک ایسا ہی واقعہ امریکہ کے فلوریڈا میں پیش آیا ہے ۔ بڑی بہن نے چھوٹی بہن کا اس لئے قتل کردیا کیونہ وہ اس کے بوائے فرینڈ پر ڈورے ڈالنے لگی تھی ۔ بڑی بہن نے چاقو سے حملہ کرکے چھوٹی بہن کو موت کے گھاٹ اتار دیا ۔ اب اس پر قتل کا چارج لگایا گیا ہے ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ 21 سال کی فاتحہ مرجان نے 26 ستمبر کو فلوریڈا کے آرلینڈو میں اپنی 20 سال کی بہن صائمہ کو بیڈ روم میں قتل کردیا ۔

      پولیس کے مطابق فاتحہ نے کئی مرتبہ اپنی بہن کے دل پر چاقو سے حملہ کیا ۔ ساتھ ہی انہوں نے اپنا جرم بھی قبول کرلیا ہے ۔ ایسا مانا جارہا ہے کہ انہوں نے یہ قتل صبح میں کیا ۔ دراصل اس وقت گھر کے دیگر لوگ سو رہے تھے ۔ فاتحہ نے کہا کہ صائمہ اپنے بستر پر سو رہی تھی ۔ اس نے دل میں چاقو گھونپنا شروع کردیا ۔ فاتحہ نے صائمہ کے دل پر تین سے چار مرتبہ چاقو گھونپنے کی بات قبول کی ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: 78 سال کی عمر میں شادی، 3 سال لیو ان میں بھی رہا، لڑکی کی عمر جان کر حیران رہ جائیں گے آپ


       

      یہ بھی پڑھئے: شوہر 56 سال کا، بچے 22، اب 25 سال کی بیوی نے کہا : 80 اور پیدا کرنے کی خواہش


      فاتحہ فی الحال جیل میں بند ہے ۔ افسران کا الزام ہے کہ آرینج کاونٹی کے گھر میں قتل منصوبہ بند تھا اور فاتحہ نے کچھ ہفتے پہلے آن لائن ریٹیلر ایمیزن سے 'ڈیگر اسٹائل' چاقو خریدی تھی ۔ حلف نامہ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ فاتحہ نے ایک افسر کو بتایا کہ اس نے صائمہ کی موت کے کچھ گھنٹوں بعد ہی اپنی جان لینے پر غور کیا تھا ۔ لیکن اہل خانہ کے کسی دیگر رکن نے ایسا کرنے سے منع کردیا تھا ۔

      حلف نامہ میں دعوی کیا گیا ہے کہ فاتحہ نے اپنے ایک بیگ میں چاقو سیٹ کو اپنی الماری میں چھپا دیا تھا ۔ اس میں کہا گیا ہے کہ فاتحہ جانتی تھی کہ اس کو تب تک انتظار کرنا ہوگا جب تک کہ اس کا کنبہ سو نہیں جاتا ہے ۔ وہ نہیں چاہتی تھی کہ کوئی بھی اس واقعہ کے بارے میں جانے ۔ صائمہ کی صبح تقریبا ساڑھے چار بجے موت ہوگئی اور پندرہ گھنٹے بعد فاتحہ نے لاش کی اطلاع دینے کے بعد گھر پر پولیس کو بلایا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: