உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    23 ستمبر سے شروع ہورہی ہے سیل میں آفرس کے چکر میں دھوکے سے بچیں، ایسے بنیں اسمارٹ خریدار

    23 ستمبر سے شروع ہورہی ہے سیل میں آفرس کے چکر میں دھوکے سے بچیں، ایسے بنیں اسمارٹ خریدار

    23 ستمبر سے شروع ہورہی ہے سیل میں آفرس کے چکر میں دھوکے سے بچیں، ایسے بنیں اسمارٹ خریدار

    Fastival Sale Shopping Tips: اگر آپ فلپ کارٹ سے شاپنگ کرتے ہیں تو آپ سوپر کوائنس کے بارے میں ضرور جانتے ہوں گے۔ جب بھی آپ کچھ خریدتے ہیں تو آپ کو کچھ سوپر کوائنس دئیے جاتے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Hyderabad | Lucknow | Chennai
    • Share this:
      Fastival Sale Shopping Tips: فیسٹیول سیزن کچھ دنوں میں شروع ہوجائے گا۔ تہواروں پر لوگوں کو شاپنگ کرنا بہت پسند ہوتا ہے۔ زیادہ تر کمپنیاں شاپنگ کے لئے اس موقع تمام سیلس اور آفرس بھی دیتی ہیں۔ سیل کا نام سنتے ہی لوگوں نے فوری شاپنگ کا خیال آنے لگتا ہے۔ فیسٹیول سیزن میں لوگ سیل کا انتظار کرتے ہیں اور بھاری بھرکم لسٹ بناکر تیار رکھتے ہیں۔ اس ہفتے فلپ کارٹ اور ایمزون سمیت کئی ای کامرس کمپنیاں اپنی سب سے بڑی سیل لے کر آرہی ہیں۔ ایمزون کی Great Indian Festival Sale اور فلپ کارٹ کی Big Billion Days سیل کی 23 ستمبر سے شروعات ہوگی۔

      آج ہم آپ کو کچھ ایسی خاص باتیں بتائیں گے جس سے آپ کے پیسے بھی بچیں گے اور آپ فراڈ کا شکار بھی نہیں ہوں گے۔

      سامان لیتے وقت سیلر کی جانچ کریں
      سیل میں خریداری کرنے والے 90 فیصد لوگ اس چیز کو نظر انداز کرتے ہیں۔ خریداری میں بیچنے والے کا کردار بہت اہم ہے۔ آپ کو ایک ہی سامان بہت سے بیچنے والوں سے ملے گا، لیکن آپ کو ان ای کامرس کمپنیوں سے خریدنا چاہیے جنہوں نے انہیں اچھی ریٹنگ دی ہے۔ اگر آپ Amazon سے خریدتے ہیں تو ایمزون کے فل فیلڈ سیلرز سے سامان لیں اور اگر آپ فلپ کارڈ سے لیتے ہیں تو اسے منظور شدہ سیلر ہونا چاہیے۔

      پروڈکٹ کی کریں جانچ
      ایک اسمارٹ خریدار اپنے پیسے کو صحیح جگہ پر انوسٹ کرتا ہے۔ خریداری کے وقت زیادہ تر لوگ صرف آفرس پر دھیان دیتے ہیں، لیکن وہ پروڈکٹس کی صحیح جانکاری نہیں لیتے۔ جب بھی آپ کسی سامان کو ایمزون یا پھر فلپ کارٹ سے لیتے ہیں تو پروڈکٹ کی جانچ کریں۔ اس سامان کی آفیشیل ویب سائٹ پر جاکر تفصیل چیک کریں۔

      گروسری کے سامان پر دیں خصوصی دھیان
      بگ بلین ڈیز سیل اور گریٹ انڈین سیل کے دوران ایمزون اور فلپ کارٹ دونوں گروسری پر بھاری رعایت پیش کرتے ہیں۔ زیادہ تر گروسری آئٹمز کی میعاد ختم ہونے کی تاریخ محدود ہوتی ہے۔ کسی بھی سامان کی ایکسپائری ڈیٹ اس کے استعمال کی زیادہ سے زیادہ حد کا تعین کرتی ہے، ایسی صورت حال میں یہ بہت اہم ہو جاتا ہے کہ آپ جو سامان لے رہے ہیں اسے کتنے دنوں تک استعمال کر سکتے ہیں۔ کئی بار لوگ سستے دام کے مفاد میں ایسی چیزیں لے لیتے ہیں جو چند دنوں کے بعد استعمال نہیں ہو پاتے۔

      کیش بیک کے آفر میں نہ پھنسے
      فلپ کارٹ اور ایمیزون اپنی سال کی سب سے بڑی سیل کے دوران یوزرس کو کیش بیک کا آفر دیتے ہیں۔ کئی مرتبہ لوگ فکس پرائز ہونے کے باوجود کیش بیک کے چکر میں پھنس جاتے ہیں، آپ ایسی غلطی نہ کریں۔ کیش بیک میں بہت سے ٹرم اینڈ کنڈیشنس لاگو ہوتی ہیں، خریداری سے پہلے ان پر ضرور دھیان دیں۔

      نو کاسٹ ای ایم آئی سے بچیں
      سیل کے دوران اکثر نو کاسٹ ای ایم آئی کا آفر دیا جاتا ہے۔ نو کاسٹ EMI کا آفر دیا جاتا ہے۔ اس میں یوزرس کو لگتا ہے کہ اگر وہ ای ایم آئی پر کوئی سامان خریدتا ہے تو اسے انٹرسٹ نہیں دینا پڑے گا لیکن اس میں بھی کئی طرح کی شرطیں لاگو ہوتی ہیں۔ خریداری کرتے وقت اس کا بھی دھیان دیں۔

      پروڈکٹ کی MRP کریں چیک
      گریٹ انڈین سیل اور بگ بلین سیل میں آپ کو 80 فیصد تک چھوٹ کا آفر دیکھنے کو ملتا ہے۔ کئی مرتبہ لوگ اتنی چھوٹ دیکھ کر خریداری کا من بنالیتے ہیں لیکن یہاں پر آپ کو محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ کئی مرتبہ چھوٹ اور کاسٹ کے درمیان کافی کم فرق ہوتا ہے لیکن اس پروڈکٹ کی ایم آر پی بہت زیادہ لکھی جاتی ہے تا کہ آپ جھانسے میں آجائیں۔ اس لئے بھاری بھرکم چھوٹ والے پروڈکٹ کی خریداری کرتے وقت اس کی قیمت کو دوسری سائٹ پر بھی ضرور دیکھیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      نظام دکن میر عثمان علی خان کی جانب سے ہندوستانی حکومت کو 5,000 کلو سونا کاعطیہ

      یہ بھی پڑھیں:
      ہیکرس نے اسکول میسیجنگ ایپ کو کیا ہیک، ٹیچرس اور والدین کو بھیجی برہنہ فوٹوز

      سوپر کوائنس کا کریں استعمال
      اگر آپ فلپ کارٹ سے شاپنگ کرتے ہیں تو آپ سوپر کوائنس کے بارے میں ضرور جانتے ہوں گے۔ جب بھی آپ کچھ خریدتے ہیں تو آپ کو کچھ سوپر کوائنس دئیے جاتے ہیں۔ سیل کے دوران اگر آپ سوپر کوائنس کا استعمال کرتے ہیں تو آپ یپسوں کی زیادہ بچت کرپائیں گے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: