உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دماغی و ذہنی صحت کیلئے سلو پوائزن ہے سوشل میڈیا کا زیادہ استعمال، تحقیق سے ہوا بڑا انکشاف

    Mental Health Awareness:  ماہرین کا ماننا ہے کہ سوشل میڈیا میں کچھ حدیں مقرر کی جانی چاہئیں۔ لوگوں کو اس کے استعمال سے حاصل ہونے والی لذت کو محدود کرنے کی ضرورت سے آگاہ کرنے کی ضرورت ہے۔

    Mental Health Awareness: ماہرین کا ماننا ہے کہ سوشل میڈیا میں کچھ حدیں مقرر کی جانی چاہئیں۔ لوگوں کو اس کے استعمال سے حاصل ہونے والی لذت کو محدود کرنے کی ضرورت سے آگاہ کرنے کی ضرورت ہے۔

    Mental Health Awareness: ماہرین کا ماننا ہے کہ سوشل میڈیا میں کچھ حدیں مقرر کی جانی چاہئیں۔ لوگوں کو اس کے استعمال سے حاصل ہونے والی لذت کو محدود کرنے کی ضرورت سے آگاہ کرنے کی ضرورت ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      Social Media and Mental Health: کورونا کی وبا کے بعد سے سوشل میڈیا کا استعمال کئی گنا بڑھ گیا ہے۔ ڈیجیٹل دنیا digital world کے استعمال نے ہماری صحت کے ساتھ ساتھ ہماری زندگیوں پر بھی بہت بڑا اثر ڈالا ہے۔ کورونا کے دور میں لاک ڈاؤن کے نفاذ کے ساتھ ہی لوگ سوشل میڈیا کی طرف زیادہ مائل ہوئے اور اس کی وجہ سے سماجی فاصلے بڑھنے لگے۔

      اس اچانک تبدیلی نے ہماری زندگیوں کو متاثر کردیا۔ سوشل میڈیا کے بے تحاشہ استعمال نے بہت سے باہمی جذباتی پہلوؤں کو تباہ کیا ہے اور ساتھ ہی کئی طرح کی گہری ذہنی اذیت کو بھی جنم دیا ہے۔ ادھر جرمنی کے شہر بوخم کی روہر یونیورسٹی کے محققین نے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کے بڑھتے ہوئے استعمال پر ایک تحقیق کی اور پتہ لگایا کہ اس تبدیلی نے انسانی زندگی کو کتنا متاثر کیا ہے۔

      میڈیکل نیوز ٹوڈے کے مطابق، اس تحقیق کی قیادت یونیورسٹی کے سینٹر فار مینٹل ہیلتھ ریسرچ اینڈ ٹریٹمنٹ کی اسسٹنٹ پروفیسر جولیا برائیلوسوسکایا نے کی۔ تحقیق سے بہت سی باتیں سامنے آئیں۔

      ذہنی صحت پر سوشل میڈیا کے اثرات
      محققین نے کہا کہ دماغی صحت کا انحصار دو باہم منسلک پہلوؤں پر ہوتا ہے - مثبت اور منفی پہلو۔ میڈیکل نیوز ٹوڈے نے ماہر نفسیات ڈاکٹر شیلڈن زابلو کے ساتھ اس تحقیق پر تبادلہ خیال کیا۔ دماغی و ذہنی صحت کے بارے میں، ڈاکٹر جبلو نے خبردار کیا کہ سوشل میڈیا کا زیادہ استعمال باہمی بندھن کو کمزور کرتا ہے اور ایک شخص کے ذہن پر منفی اثر ڈال سکتا ہے۔

      اکیلے رہ کر خواتین ایسے لیں زندگی کا مزہ، نہیں محسوس ہوگی کسی کی کمی

      کچھ برا ہونے کے ڈر سے آرہا پسینہ، کہیں Anxiety Attack تو نہیں؟ جانئے اہم معلومات

      ماہرین کا ماننا ہے کہ سوشل میڈیا میں کچھ حدیں مقرر کی جانی چاہئیں۔ لوگوں کو اس کے استعمال سے حاصل ہونے والی لذت کو محدود کرنے کی ضرورت سے آگاہ کرنے کی ضرورت ہے۔ اس کے ساتھ یہ جاننا بھی ضروری ہے کہ سوشل میڈیا کے علاوہ ہمارے پاس اور کون سے ذرائع ہیں جن سے ہم وہی خوشی محسوس کر سکتے ہیں جو سوشل میڈیا کے استعمال سے ہمیں ملتی ہے۔

      Relationship میں آپ بھی ہو رہے ہیں Anxiety کا شکار؟ ان 6علامات سے کریں پہچان

      ورزش دماغ کو کیسے فائدہ پہنچاتی ہے۔
      ماہر نفسیات ڈاکٹر جبلون نے کہا کہ ورزش زیادہ تر کسی بھی قسم کی ذہنی بیماری میں صلاح دی جاتی ہے۔ اگر کوئی شخص ورزش نہیں کرتا تو کہا جاتا ہے کہ ورزش کے بغیر دوا ٹھیک سے کام نہیں کرے گی۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: