اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ’اسلام میں میری کرسمس کہنے کی اجازت ہے‘ مسلم ورلڈ لیگ کے سربراہ شیخ ڈاکٹر محمد العیسیٰ کابیان وائرل

    مسلم ورلڈ لیگ کے سربراہ شیخ ڈاکٹر محمد العیسیٰ (تصویر ٹوئٹر: @MWLOrg_en)

    مسلم ورلڈ لیگ کے سربراہ شیخ ڈاکٹر محمد العیسیٰ (تصویر ٹوئٹر: @MWLOrg_en)

    سعودی عرب کے معروف عالم دین اور رابطہ عالم اسلامی کے سربراہ شیخ محمد العیسیٰ (Sheikh Mohammed Al-Issa) نے غیر مسلموں کو ان کے مقدس دنوں کے موقع پر مسلمانوں کی جانب سے مبارکباد دینے کے بارے میں فتویٰ جاری کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ شرعی قانون سے متعلق اس مسئلہ پر اعتراض کرنا جائز نہیں ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Saudi Arabia
    • Share this:
      رابطہ عالم اسلامی یا مسلم ورلڈ لیگ (Muslim World League) کے سربراہ شیخ محمد العیسیٰ کے مطابق مسلمانوں کی جانب سے عیسائیوں کو کرسمس کی مبارکباد دینے پر پابندی نہیں ہے اور اسلام میں میری کرسمس کہنے کی اجازت ہے۔ سعودی عرب کے معروف عالم دین شیخ محمد العیسیٰ (Sheikh Mohammed Al-Issa) نے اس بات کا اعادہ کیا کہ اسلامی شریعت مسلمانوں کو یوم ولادت مسیح (حضرت عیسیٰ علیہ السلام) کے موقع پر عیسائیوں کو میری کرسمس کہنے یا انھیں مبارکباد دینے سے نہیں روکتی ہے۔

      شیخ محمد العیسیٰ نے غیر مسلموں کو ان کے مقدس دنوں کے موقع پر مسلمانوں کی جانب سے مبارکباد دینے کے بارے میں فتویٰ جاری کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ شرعی قانون سے متعلق اس مسئلہ پر اعتراض کرنا جائز نہیں ہے۔ مزید برآں ان کا کہنا ہے کہ اتفاق رائے کے ساتھ مسائل پر بحث کی جاسکتی ہے۔ ان کا حل نکالا جانا چاہیے۔

      العیسیٰ کے مطابق کوئی مذہبی متن اس طرح کی مبارکباد کی ممانعت نہیں کرتا۔ جب کوئی مسلمان کسی دوسرے غیر مسلم کو ان کے مذہبی مقدس دنوں کے موقع پر مبارکباد دیتا ہے، تو اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ مسلمان بھی ان کے مذہب یا عقیدے کو اپنا رہا ہے، بلکہ وہ صرف موقع کے حساب سے ایک رسم ادا کررہا ہے، جس کا اسلامی دین و عقیدے سے کوئی تعلق نہیں ہوتا ہے۔ العیسیٰ کے مطابق غیر مسلموں کو ان کے مقدس دنوں کے موقع پر مبارکباد دینا اسلامی وقار اور نیک نامی ہے۔ جس سے دیگر مذاہب کے ماننے والے اچھا تاثر لیں گے۔



      مذہبی رواداری، بقائے باہمی اور ہم آہنگی:

      انھوں نے کہا کہ اس کا مقصد ایسی دنیا میں بقائے باہمی اور ہم آہنگی کو فروغ دینا ہے جہاں ان اقدار کی اشد ضرورت ہے۔ العیسیٰ نے نشاندہی کی کہ اسلام اہل کتاب کے کھانے کی اجازت دیتا ہے، جو عیسائیوں اور یہودیوں کے لیے ہے اور کسی دوسرے اہل مذہب کے کھانوں کی اجازت نہیں دیتا۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      یہ بات قابل ذکر ہے کہ کئی علما کے درمیان میری کرسمس کہنا یا ہندوؤں کے مقدس دنوں کے موقع پر ان کو مبارکباد دینا ہندوستانی علما کے درمیان بھی متنازعہ فی مسئلہ رہا ہے۔ کرسمس کی مبارکباد دینے کو غیر اسلامی عمل قرار دیا جاتا ہے۔ جب کہ کئی مسلمان ایسا نہیں مانتے ہیں۔

      کیا اسلام میں مسلمانوں کے لیے کرسمس منانا حرام ہے؟ یا یہ غیر اسلامی عمل ہے؟ اس پر آپ کی کیا رائے ہے؟
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: