உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Spending Time on Gadgets: الیکٹرانک گیجٹس پر زیادہ وقت گزارنا آپ کی زندگی کیلئے بن سکتا ہے خطرہ! تحقیق میں ہوا انکشاف

    گیجٹس سے نکلنے والی نیلی روشنی کی وجہ سے جلد بڑھاپا آسکتا ہے۔

    گیجٹس سے نکلنے والی نیلی روشنی کی وجہ سے جلد بڑھاپا آسکتا ہے۔

    Spending Time on Gadgets: تحقیق کے شریک مصنف جدوبیگا گیبولٹیوچ (Jadwiga Giebultowicz) کا تعلق امریکہ کی اوریگون اسٹیٹ یونیورسٹی سے ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ روزمرہ استعمال کیے جانے والے آلات جیسے ٹی وی، لیپ ٹاپ اور فونس سے نیلی روشنی کے اخراج سے ہمارے جسم کے خلیوں پر نقصان دہ اثرات پڑ سکتے ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | Hyderabad | Lucknow | Karnataka
    • Share this:
      Spending Time on Gadgets: مشین لرننگ، الگوریدم، منصوعی ذہانت اور الیکٹرانک گیجٹس کا استعمال روزمرہ زندگی میں نہ صرف عام ہورہا ہے بلکہ اس کا استعمال مسلسل بڑھتا ہی جارہا ہے۔ موبائیل فون، لیپ ٹاپ اور الیکٹرانک گھڑی کے علاوہ کئی ایسے وسائل ہیں جو کہ ہماری روزہ مرہ زندگی کا حصہ ہیں۔ ماضی میں کئی تحقیقات کے ذریعہ یہ بات سامنے آئی تھی کہ الیکٹرانک آلات یعنی گیجٹس (Gadgets) کے استعمال کے دوران زیادہ وقت گزارنے سے آپ کی بینائی یا دماغی صحت متاثر ہو سکتی ہے۔

      تاہم ایک نئی تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ گیجٹس آپ کی جسمانی تبدیلی اور عمر بڑھنے کے عمل کو بھی متاثر کر سکتے ہیں۔ ’فرنٹیئرز ان ایجنگ‘ (Frontiers in Aging) نامی جریدے میں شائع ہونے والے جانوروں سے متعلق تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ اسمارٹ فونز اور لیپ ٹاپ سمیت گیجٹس کی ضرورت سے زیادہ نیلی روشنی عمر بڑھنے کے عمل کو شدید متاثر کرسکتی ہے۔ آج کل گھروں میں بچہ پیدا ہونے کے چند سال کے اندر ہی موبائیل دیا جاتا ہے۔ اس کی ظاہری وجہ بچوں کو خوش کرنا اور انھیں مصروف رکھنا ہے لیکن اس کے مضر اثرات کے بارے میں لوگ اب بھی ناواقف ہیں۔

      حالیہ دور میں کی جانے والی ایک تحقیق کے شریک مصنف جدوبیگا گیبولٹیوچ (Jadwiga Giebultowicz) کا تعلق امریکہ کی اوریگون اسٹیٹ یونیورسٹی سے ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ روزمرہ استعمال کیے جانے والے آلات جیسے ٹی وی، لیپ ٹاپ اور فونس سے نیلی روشنی کے اخراج سے ہمارے جسم کے خلیوں پر نقصان دہ اثرات پڑ سکتے ہے۔ جس کی وجہ سے ہماری جلد اور چربی کے خلیوں سے لے کر حسی نیوران تک اثر پڑتا ہے۔

      جدوبیگا گیبولٹیوچ نے مزید کہا کہ ہم سب سے پہلے یہ ظاہر کرنے والے ہیں کہ مخصوص میٹابولائٹس کی سطح کو پھلوں کی مکھیوں میں تبدیل کیا جاتا ہے جو نیلی روشنی کے سامنے آتے ہیں۔ نیلی روشنی ایک کیمیائی مادہ ہے، جو خلیات کو درست طریقے سے کام کرنے سے روک سکتا ہے، جس کی وجہ سے انسان کی عمر پر بھی اثر پڑسکتا ہے۔

      محققین نے پہلے دکھایا تھا کہ پھل کی مکھیاں روشنی کے سامنے آنے والے تناؤ سے بچانے والے جینز کو 'آن' کرتی ہیں، اور لوگ مسلسل اندھیرے میں رہتے ہیں وہ طویل عرصے تک زندہ رہتے ہیں۔ یہ سمجھنے کے لیے کہ کیوں نیلی روشنی مکھیوں میں بڑھاپے کو تیز کرنے کے لیے ذمہ دار ہے، ٹیم نے مکھیوں میں میٹابولائٹس کی سطح کا موازنہ دو ہفتوں تک مکمل اندھیرے میں رہنے والی مکھیوں سے کیا۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      Swiggy, Zomato جیسے ایپ سے آن لائن کھانا منگانا 60 فیصد تک مہنگا؟ سروے سے بڑا انکشاف

      نیلی روشنی کی نمائش نے مکھی کے سروں کے خلیوں میں محققین کے ذریعہ ماپنے والے میٹابولائٹس کی سطح میں نمایاں فرق پیدا کیا۔ خاص طور پر، انہوں نے محسوس کیا کہ میٹابولائٹ سکسینیٹ کی سطح میں اضافہ ہوا تھا، لیکن گلوٹامیٹ کی سطح کو کم کیا گیا تھا.

      یہ بھی پڑھیں: 

      مرد اس خاتون کو گڑیا کے طور پر سمجھتے ہیں لیکن حقیقی زندگی میں نہیں رکھنا چاہتا کوئی رشتہ، جانئے پورا ماجرا

      محققین کی طرف سے ریکارڈ کی گئی تبدیلیوں سے پتہ چلتا ہے کہ خلیات ایک ذیلی سطح پر کام کر رہے ہیں، اور یہ ان کی قبل از وقت موت کا سبب بن سکتا ہے، اور مزید، ان کے سابقہ ​​نتائج کی وضاحت کرتے ہیں کہ نیلی روشنی بڑھاپے کو تیز کرتی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: