உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Twin Tower Demolition: ٹوئن ٹاور کو گرتے ہوئے دیکھنے کیلئے آس پاس کی بلڈنگ کی بالکونیاں ہورہی ہیں بک، چائے ناشتے کے ساتھ پورا شو دیکھنے کی تیاری

    Twin Tower Demolition: ٹوئن ٹاور کو گرتے ہوئے دیکھنے کیلئے آس پاس کی بلڈنگ کی بالکونیاں ہورہی ہیں بک، چائے ناشتے کے ساتھ پورا شو دیکھنے کی تیاری

    Twin Tower Demolition: ٹوئن ٹاور کو گرتے ہوئے دیکھنے کیلئے آس پاس کی بلڈنگ کی بالکونیاں ہورہی ہیں بک، چائے ناشتے کے ساتھ پورا شو دیکھنے کی تیاری

    Twin Tower Demolition: ایسی جانکاریاں سامنے آئی ہیں کہ سپر ٹیک ٹوئن ٹاور کے چاروں جانب بڑی بڑی عمارتوں کی بالکنی 'وی آئی پی گیلری' بننے جارہی ہے ، کیونکہ لوگ ان بالکنیوں سے ٹوئن ٹاور کو زمیں دوز ہوتے ہوئے دیکھنا چاہتے ہیں ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | New Delhi | Noida
    • Share this:
      نوئیڈا : نوئیڈا کے سپرٹیک ٹاور کو اتوار کو گرانے کی تیاری پوری ہوچکی ہے ۔ ایڈیفس انجینئرنگ کمپنی کو ان دونوں عمارتوں کو منہدم کرنے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے ۔ احتیاط کے طور پر ٹوئن ٹاور کے نزدیک واقع ایمرالڈ کورٹ کے 660 گھر اور اے ٹی ایس ویلیج کے 762 گھر 28 اگست کو صبح سات بجے خالی کرا لئے جائیں گے ۔ ایمرالڈ کورٹ اور اے ٹی ایس ویلیج سوسائٹی کی گاڑیوں کیلئے دوسری پارکنگ کا بندوبست اور باغ باغیچوں کا تحفظ کیا جائے گا ۔ مگر لوگوں میں ان بلند عمارتوں کو منہدم ہوتے ہوئے دیکھنے کا اپنا الگ ہی ایک کریز ہے ۔

      ایسی جانکاریاں سامنے آئی ہیں کہ سپر ٹیک ٹوئن ٹاور کے چاروں جانب بڑی بڑی عمارتوں کی بالکنی 'وی آئی پی گیلری' بننے جارہی ہے ، کیونکہ لوگ ان بالکنیوں سے ٹوئن ٹاور کو زمیں دوز ہوتے ہوئے دیکھنا چاہتے ہیں ۔ ٹائمز آف انڈیا کی ایک رپورٹ کے مطابق اے ٹی ایس ون ہیملیٹ ( سیکٹر 104) اور دوسری سوسائٹیوں میں جن لوگوں کے گھروں کی بالکنی سے ٹوئن ٹاور گرتے ہوئے نظر آئے گا، ان کے دوستوں اور رشتہ داروں نے بالنکی کو پہلے ہی 'بک' کرلیا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: ٹوئن ٹاور انہدام سے پہلے کی جا رہی ہے بڑے پیمانے پر تیاری


      کئی گھروں میں تو پورا کنبہ ہی دو پہر ڈھائی بجے 'زندگی میں ایک مرتبہ' ہونے والے اس واقعہ کا گواہ بننے کیلئے جمع ہورہا ہے ۔ کچھ رہائشیوں کا کہنا ہے کہ رشتے دار اور دوست بھی ان کے ساتھ جڑنے کے خواہش مند ہیں۔ حالانکہ ٹریفک پابندی ان کے منصوبہ کو ناکام کرسکتے ہیں ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: صرف 12سیکنڈ میں زمین دوز ہوجائیں گے سوپرٹیک کے ٹوئن ٹاور


      اے ٹی ایس ہیملیٹ کے رہنے والے آلوک سہدیو کا ایک سات سال کا پوتا ہے، جو اتوار کو دوپہر ڈھائی بجے ٹاروں کو نیچے جاتے دیکھنے کیلئے اپنے والدین اور دوربین کے ساتھ گڑگاوں سے آرہا ہے ۔ سہدیو نے کہا کہ وہ اس وقت ویڈیو کال کے ذریعہ امریکہ میں رہنے ان کے کبنہ کے لوگوں کو بھی جوڑیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ میں اپنے رشتہ داروں کے ساتھ مذاق کررہا ہوں کہ پانچ سو روپے فی شخص کی انٹری فیس دے کر اس انہدام کی کارروائی کو دیکھ سکتے ہیں ۔ جب ہمارا سولہویں منزل کا فلیٹ پورا بک ہوجائے گا تو میں مہمانوں کو ہمارے پڑوسی کے گھر بھی بھیجوں گا ۔

      ایملیٹ کے ایک دوسرے رکن ایس کے لیکھا نے کہا کہ ان کا کنبہ چائے کے ساتھ اپنی بالکنی سے یہ پورا نظارہ دیکھے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے کچھ رشتہ دار پوچھ رہے ہیں کہ کیا وہ بھی ہمارے ساتھ آسکتے ہیں، لیکن مجھے لگتا ہے کہ ٹریفک بند ہونے سے ان کیلئے یہاں آنا مشکل ہوجائے گا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: