جموں وکشمیر : مسلم اکثریتی ریاست ہونے کی وجہ سے آرٹیکل 370کو ہٹایا گیا۔ چدمبرم کا اظہارخیال

Aug 12, 2019 12:55 PM IST | Updated on: Aug 12, 2019 12:55 PM IST
جموں وکشمیر : مسلم اکثریتی ریاست ہونے کی وجہ سے آرٹیکل 370کو ہٹایا گیا۔ چدمبرم کا اظہارخیال

کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم نے کہا کہ جموں و کشمیر کے مسلم اکثریتی ریاست ہونے کی وجہ سے ہی آئین کے آرٹیکل 370کو ہٹایا گیا ہے۔ چدمبرم نے کہا کہ اگر جموں و کشمیر میں ہندوؤں کی تعداد زیادہ ہوتی توبی جےپی یہ قدم کبھی نہیں اٹھاتی۔انہوں نے مرکز کی بی جےپی کی قیادت والی حکومت پراقتدار کی طاقت کا استعمال کرتے ہوئے جموں و کشمیر کو خصوصی درجہ دینے والے آئین کے آرٹیکل 370کو ہٹانےکےلئے سخت مذمت کی۔

انہون نے الزام لگایا کہ ملک کے 70سال کی تاریخ میں کسی ریاست کے ٹکڑے کر مرکز کے زیر انتطام ریاست بنانے والا یہ واقعہ پہلے کبھی نہیں ہوا۔انہوں نے اس مسئلے پر اپوزیشن پارٹیوں کے رخ پرعدم اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ لوک سبھا میں بھلے ہی اکثریت نہیں تھی لیکن اے آئی اے ڈی ایم ،وائی ایس آر،کانگریس پارٹی،تلنگانہ راشٹر سمیتی ،بیجو جنتادل،عام آدمی پارٹی،ترنمول کانگریس اور جنتا دل (یونائیٹید)نے تعاون نہ کیا ہوتا تو یہ بل راجیہ سبھا میں منظور نہیں کیاجاتا۔انہوں نے کہاکہ اپوزیشن کا رویہ بےحد افسوس ناک ہے۔ کانگریسی لیڈر نے کہا کہ جموں و کشمیر کے حالات بے حد خراب ہیں۔ریاست میں انٹرنیٹ سمیت تمام مواصلاتی ذرائع پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ جس سے صحیح اور حقیقی حالات کی اطلاع باہرنہیں آپارہی ہے۔

Loading...

Loading...