آرٹیکل 370 کی منسوخی:اب پاکستان لے گا یہ بڑافیصلہ۔ کمزورہوگی پاکستان کی معیشت

اس سے پہلے پاکستان کو فضائی حدود کی بندش پر 688 کروڑ روپے کا نقصان برداشت کرنا پڑاتھا جو ہندوستان سے 200 کروڑ روپئے زیادہ تھا۔

Aug 28, 2019 09:54 AM IST | Updated on: Aug 28, 2019 09:59 AM IST
آرٹیکل 370 کی منسوخی:اب پاکستان لے گا یہ بڑافیصلہ۔ کمزورہوگی پاکستان کی معیشت

پاکستان کی جانب سے ایک بارپھر ہندوستان کیلئے فضائی حدود بند کرنے پرغورکیاجارہاہے۔(تصویر:نیوز18ہندی)۔

پاکستان کی جانب سے ایک بارپھر ہندوستان کیلئے فضائی حدود بند کرنے پرغورکیاجارہاہے۔ پاکستانی میڈیا کے مطابق اس سلسلہ میں سنجیدہ مشاورت شروع ہوگئی ہے اور آئندہ 48 گھنٹوں میں عمران خان حکومت سے اس معاملہ پرکوئی اہم فیصلہ لیے سکتی ہے۔ پاکستان کے وزیرہوابازی غلام سرور خان کا کہنا ہے کہ کابینہ میٹنگ میں ہندوستان کیلئے پاکستانی فضائی حدود بند کرنے کے حوالے سے مشاورت کی گئی۔ فضائی حدود کی بندش کے حوالے سے ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔ تاہم اس بارے میں حتمی فیصلہ اگلے 48 گھنٹے میں کیا جائے گا۔

وہیں دوسری جانب یہ بھی خبر ہے کہ پاکستان نے اگلے تین دن کے لئے کراچی فضائی حدود بند کرنے کا فیصلہ کیاہے۔ عمران خان حکومت کے اس فیصلے کے بعد کسی بھی ملک کے طیاروں کو کراچی فضائی حدود پر اڑنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ پاکستان حکومت کے وزیر فواد حسین نے پہلے کہا تھا کہ عمران خان ہندوستان کے لئے تمام فضائی حدود کو مکمل طورپربند کرنے پرغورکر رہے ہیں۔ تاہم ،ہوائی اڈے کی انتظامیہ نے کراچی فضائی حدود کی بندش کے پیچھے فلائٹ آپریشن میں تکنیکی مشکلات کا حوالہ دیا ہے۔

Loading...

اس سے پہلے، پاکستان کے سائنس اور ٹیکنالوجی کے وزیر فواد حسین چودھری نے کہا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان ہندوستان کے لئے فضائی حدود کو مکمل طور پربند کرنے پرغورکررہے ہیں۔ا س کے ساتھ ہی افغانستان اور ہندوستان کے مابین تجارت کے لئے پاکستانی راستوں کے استعمال پر بھی مکمل پابندی عائد کی جاسکتی ہے۔انہوں نے مزید بتایا کہ عمران خان کی زیرصدارت کابینہ کے اجلاس میں ہندوستان کے لئے فضائی حدود اور زمینی راستوں کے استعمال پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

چودھری نے ٹویٹ کیا کہ، 'وزیر اعظم ہندوستان کے لئے فضائی حدود کو مکمل طور پربند کرنے پرغور کررہے ہیں۔ ایک تجویزیہ بھی آئی ہے کہ ہندوستانی تجارت کے لئے افغانستان جانے والے پاکستانی زمینی راستوں کامکمل طورپراستعمال بند کردیں۔ ان فیصلوں کے لیے قوانین امور کا جائزہ لیاجارہاہے۔ انہوں نے لکھاہے کہ مودی نے شروع کیا۔ہم اسے ختم کردیں گے۔

 

بالاکوٹ حملے کے بعدفضائی حدود کو کیا گیا تھا بند

بتادیں کہ پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے پیر کو ایٹمی حملے کی دھمکی دی تھی۔ وزیر اعظم نریندرمودی ، پاکستان کے دھمکی کو نظر انداز کرتے ہوئے،پاکستانی فضائی حدود کا استعمال کرتے ہوئے فرانس سے وطن واپس آئے۔یادررہے کہ بالاکوٹ میں جیش محمد دہشت گرد کیمپ پر ہندوستانی فضائیہ کے حملے کے بعد فروری میں پاکستان نے اپنی فضائی حدود کو بند کردیا۔ پاکستان نے 27 مارچ کو نئی دہلی ، بینکاک اور کوالالمپور کے علاوہ تمام پروازوں کے لئے اپنی فضائی حدود کھول دی۔ اس کے بعد، 15 مئی کو، پاکستان نے ہندوستانی طیاروں کے لئے فضائی حدود پر پابندی 30 مئی تک بڑھا دی۔ پھر 16 جولائی کو، انہوں نے تمام سویلین پروازوں کے لئے اپنی فضائی حدود کھول دی۔

فضائی حدود بند ہونے سے پاکستان کا نقصان

اگر پاکستان، ہندوستان کے لئے فضائی حدود بند کرتاہے تواس صرف ہندوستان ہی نہیں بلکہ پاکستان کا بھی بڑا نقصان ہوگا۔ ان دنوں پاکستان کی معاشی حالت ابترہوگئی ہے۔لوگ بے روزگارہیں۔ پاکستان میں کھانے پینے کی قیمتوں میں تیزی سے اضافہ ہواہے۔ مہنگائی کی وجہ سے لوگوں کی زندگی مشکل ہورہی ہے۔ یادررہے کہ بالاکوٹ فضائی حملے کے بعد ، پاکستان نے ہندوستانی طیاروں کے لئے فضائی حدود بند کردی تھی۔ لیکن حکومت کا یہ فیصلہ ملک کے لیے بہت نقصاندہ ثابت ہواتھا۔اس سے پہلے پاکستان کو فضائی حدود کی بندش پر 688 کروڑ روپے کا نقصان برداشت کرنا پڑاتھا جو ہندوستان سے 200 کروڑ روپئے زیادہ تھا۔ ایسی صورتحال میں یہ سمجھا جاسکتا ہے کہ اگر پاکستان نے پھر سے فضائی حدود کوبندکردیا تو اس کی حالت کیا ہوگی۔

Loading...