جموں وکشمیر:عیدالاضحٰی کے موقع پر صورتحال پرامن ۔ عیدگاہوں اورمساجد میں روح پروراجتماعات

ملک بھرمیں آج عیدالاضحٰی منائی جارہی ہے۔ اس موقع پر جموں و کشمیر میں بھی صورتحال معمول کے مطابق ہے۔ آرٹیکل 370 کے منسوخی کے بعدعد وادی میں مسلمان آج بقرعید منارہے ہیں ۔مختلف مساجد اورعیدگاہوں میں نمازعید اداکی گئی ہے۔وہیں انتظامیہ کل سے ہی لوگوں کوکھانے پینے اوردیگر ضروری چیزوں کی فراہمی میں مصروف ہے۔

Aug 12, 2019 01:19 PM IST | Updated on: Aug 12, 2019 01:19 PM IST
جموں وکشمیر:عیدالاضحٰی کے موقع پر صورتحال پرامن ۔ عیدگاہوں اورمساجد میں روح پروراجتماعات

جموں وکشمیر: عیدالاضحٰی کے موقع پر صورتحال پرامن۔(تصویر:اے این آئی)۔

ملک بھرمیں آج عیدالاضحٰی منائی جارہی ہے۔ اس موقع پر جموں و کشمیر میں بھی صورتحال معمول کے مطابق ہے۔ آرٹیکل 370 کے منسوخی کے بعدعد وادی میں مسلمان آج بقرعید منارہے ہیں ۔مختلف مساجد اورعیدگاہوں میں نمازعید اداکی گئی ہے۔وہیں انتظامیہ کل سے ہی لوگوں کوکھانے پینے اوردیگر ضروری چیزوں کی فراہمی میں مصروف ہے۔

بازار میں بھی لوٹی رونقیں

Loading...

کشمیر میں عیدالاضحی سے پہلے اتوار کے دن بینک ، اے ٹی ایم اور کچھ مارکیٹیں کھلی رہیں اور لوگوں کو تہوار کی خریداری میں آسانی کے لیے تمام پابندیوں میں نرمی کردی گئی۔ حکام نے بتایا کہ وادی میں کہیں سے بھی تشدد کی اطلاع نہیں ملی ہے۔ پولیس عہدیداروں کے مطابق جموں خطے میں صورتحال ہر رو ز معمول کے مطابق ہوتی جارہی ہے۔ پانچ اضلاع سے ممنوعہ احکامات کو مکمل طور پرختم کردیا گیا ہے۔ دیگر پانچ اضلاع میں عید کے پیش نظر پابندیوں میں نرمی کی گئی ہے۔

جموں وکمشیر کے ڈی جی پی دل باغ سنگھ نے بتایا کہ جموں وکشمیر میں آرٹیکل 370 کی منسوخی کے بعد اب حالات پْرامن ہے ۔سری نگر سمیت ریاست کے دیگربڑے شہروں میں نمازعید کی ادا کی گئی ہے۔ انہوں نے بتایاکہ عوام کو ضروری اشیاء کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وادی میں اب تک کوئی بھی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیاہے۔

حکومت اوربی جے پینے کہا ہے کہ مغربی میڈیا میں آرہی رپورٹوں کے برعکس جموں وکشمیر میں صورت حال معمول کے مطابق ہے اور لوگوں کو بغیر کسی پریشانی کے عید منانے کے لئے باضابطہ اور خصوصی انتظام کئے گئے ہیں۔ذرائع بتایا کہ جموں وکشمیر حکومت نے اشیاء کا مناسب ذخیرہ کیا گیا ہے جس میں 65 دن کے لئے گیہوں، 55 دن کے لئے چاول اور 17 دن کے لئے مٹن جیسی چیزیں شامل ہیں۔ مٹی کا تیل اور ڈیزل کا ذخیرہ بھی 35 دن کے لئے ہے۔ حکومت نے کہا ہے کہ ’’ہر ضلع میں عام لوگوں کو راشن کی فراہمی کے لئے راشن گھاٹ کام کررہے ہیں۔ کشمیر ڈویژن کے 3607 راشن گھاٹوں میں سے 3557 گھاٹ لوگوں کو راشن دے رہے ہیں۔ سعودی عرب سے حاجیوں کو لوٹنے کے لئے بھی خصوصی انتظامات کئے گئے ہیں۔اس کے لئے 18 اگست سے پروازیں شروع ہوجائیں گی۔ سبھی ڈپٹی کمشنروں نے اپنے نوڈل افسران کو ہوائی اڈے پر رہنے کے لئے کہا ہے۔

Loading...