آرٹیکل 370 کی منسوخی : نظربندی کے دوران محبوبہ مفتی اورعمرعبداللہ میں لفظی جنگ

جموں وکشمیر سے آرٹیکل 370 کو ہٹانے کے بعد ، اب معاملات آہستہ آہستہ معمول پر آرہے ہیں۔ گزشتہ ہفتے سے کئی رہنماؤں کونظر بند رکھاگیاہے۔ ریاست کے دو سابق وزرائے اعلیٰ عمرعبداللہ اور محبوبہ مفتی کو ہری نواس میں رکھا گیا تھا۔ لیکن ان دونوں کے مابین لفظی جنگ ہوگئیں۔ حالات اتنے خراب ہوگئے کہ عمر عبداللہ کو کسی اوردوسری جگہ شفٹ ہونا پڑا۔

Aug 12, 2019 11:01 AM IST | Updated on: Aug 12, 2019 11:01 AM IST
آرٹیکل 370 کی منسوخی : نظربندی کے دوران محبوبہ مفتی اورعمرعبداللہ میں لفظی جنگ

آرٹیکل 370 کی منسوخی : نظربندی کے دوران محبوبہ مفتی اورعمرعبداللہ میں لفظی جنگ-(تصویر:نیوز18ڈاٹ کام)۔

جموں وکشمیر سے آرٹیکل 370 کو ہٹانے کے بعد ، اب معاملات آہستہ آہستہ معمول پر آرہے ہیں۔ گزشتہ ہفتے سے کئی رہنماؤں کونظر بند رکھاگیاہے۔ ریاست کے دو سابق وزرائے اعلیٰ عمرعبداللہ اور محبوبہ مفتی کو ہری نواس میں رکھا گیا تھا۔ لیکن ان دونوں کے مابین لفظی چھڑپ ہوگئیں۔ حالات اتنے خراب ہوگئے کہ عمر عبداللہ کو کسی اوردوسری جگہ شفٹ ہونا پڑا۔

عمرعبداللہ اور محبوبہ مفتی نے ایک دوسرے پرلگایا الزام

Loading...

انگریزی اخبارٹائمزآف انڈیا کے مطابق ، دونوں رہنماؤں نے ایک دوسرے پر بی جے پی کو جموں و کشمیرمیں لانے کا الزام لگاتے ہوئے بحث شروع کی ۔ایک اہلکار کے مطابق ،عمرعبد اللہ نے محبوبہ مفتی پربرہمی کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ محبوبہ کے والد مفتی سعید نے بی جے پی سے سن 2015 اور 2018 کے درمیان تعلقات رکھے تھے۔

محبوبہ مفتی نے اپنے عمرعبداللہ کو یاد دلایا ماضی

پی ڈی پی کی سربراہ محبوبہ نے عمرعبداللہ کو یاد دلایا کہ ان کے والد فاروق عبداللہ اور اٹل بہاری واجپائی کے مابین ایک اتحاد تھا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ آپ واجپئی کی حکومت میں جونیئروزیرتھے۔اتناہی نہیں محبوبہ نے موجودہ حالات کے لئے عمر کے دادا شیخ عبداللہ کو بھی ذمہ دار ٹھہرایا۔

عمرعبداللہ اور محبوبہ مفتی ہری نواس میں تھے قیام پذیز

عمر عبداللہ ہری نواس میں گراؤنڈ فلورپررہائش پذیرتھے۔جبکہ محبوبہ پہلی منزل پررہے رہی تھی۔ دونوں رہنماؤں میں لفظی جھڑپ کے بعد عمرعبداللہ کو محکمہ جنگلات کے گیسٹ ہاؤس منتقل کردیا گیا ہے۔ جبکہ محبوبہ ابھی ہری نواس میں ہے۔ یہ وہی عمارت ہے جو پہلے وزیراعلیٰ کی رہائش گاہ کے طورپر تعمیرکی گئی تھی اورسابق وزیراعلیٰ غلام نبی آزاد یہاں رہتے تھے۔ ۔ لیکن بعد میں یہاں کوئی نہیں رہا۔ جس کے بعد اسے گیسٹ ہاؤس میں تبدیل کردیا گیا۔

Loading...