شوہر کو یرغمال بناکر گاڑی میں کیا بند ، پھر 8 ماہ کی حاملہ خاتون کی 8 افراد نے کی اجتماعی آبروریزی

معاملہ کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے مہاراشٹر ریاستی خواتین کمیشن نے مقامی پولیس سے رپورٹ طلب کی ہے۔

Aug 03, 2018 12:10 PM IST | Updated on: Aug 03, 2018 12:15 PM IST
شوہر کو یرغمال بناکر گاڑی میں کیا بند ، پھر 8 ماہ کی حاملہ خاتون کی 8 افراد نے کی اجتماعی آبروریزی

علامتی تصویر

مہاراشٹر کے سانگلی میں ستارا کی رہنے والی 8 ماہ کی حاملہ ایک خاتون کی 8 افراد کے ذریعہ اجتماعی آبروریزی کا سنسنی خیز معاملہ سامنے آیا ہے ۔ معاملہ کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے مہاراشٹر ریاستی خواتین کمیشن نے مقامی پولیس سے رپورٹ طلب کی ہے۔ یہ واقعہ منگل کی صبح چھ بجے اس وقت پیش آیا ، جب 20 سالہ خاتون اپنے شوہر ( ہوٹل مالک) کے ساتھ تاس گاوں کے ترچی پھاٹا میں ایک کاروباری میٹنگ کیلئے آئی تھی ۔

تاس گاوں پولیس اسٹیشن کے ایک افسر نے بتایا کہ خاتون اور اس کا شوہر اپنے ہوٹل میں کام کیلئے ملازمین کی تلاش کررہے تھے ۔ ملزم مکند مانے نے خاتون کے شوہر کو فون کرکے کہا کہ وہ ایک ایسے جوڑے کو جانتا ہے جو ان کیلئے کام کرنے کیلئے راضی ہے اور اس نے ان دونوں کو ترچی پھاٹا بلایا ۔ مانے نے انہیں 20 ہزار روپے پیشگی لانے کیلئے بھی کہا۔

جب ہوٹل کاروباری اور اس کی اہلیہ بتائے ہوئے مقام پر پہنچے تو مانے اور اس کے ساتھیوں نے ان کی بے رحمی سے پٹائی کی اور خاتون کے سونے کے زیورات کے علاوہ ان کے پاس موجود نقدی کو بھی لوٹ لیا ۔ بدمعاشوں نے شوہر کو یرغمال بناکر گاڑی میں بند کردیا اور پھر مبینہ طور پر خاتون کی آبروریزی کی ۔ واردات کو انجام دینے کے بعد سب فرار ہوگئے۔

ساتھ ہی ساتھ ملزمین نے انہیں دھمکی بھی دی کہ پولیس کے پاس نہ جائیں کیونکہ یہ لوگ کافی بااثر ہیں اور کوئی بھی ان کی بات نہیں سنے گا ۔ بعد میں جوڑے نے تاس گاوں پولیس اسٹیشن پہنچ کر شکایت درج کروائی ۔ خاتون نے اپنی ایف آئی آر میں 8 میں سے چار ملزمین مکند مانے ، ساگر ، جاوید خان اور ونود کا نام درج کرایا ہے۔ تاہم واقعہ کے تقریبا 48 گھنٹوں کے بعد بھی پولیس کسی بھی ملزم کو گرفتار نہیں کرسکی ہے ۔

Loading...

Loading...