ڈاکٹر بنے ذریعہ تو مسلم والدین نے ان کے نام پر ہی رکھ دیا بیٹے کا نام پنکج خان

لیوپس نیفرائٹس نامی بیماری ایک ایسی پیچیدہ بیماری ہے جس کی وجہ سے خواتین کو ماں بننے میں رکاوٹ پیدا ہوتی ہے۔

Jan 20, 2018 09:02 PM IST | Updated on: Jan 20, 2018 09:22 PM IST
ڈاکٹر بنے ذریعہ تو مسلم والدین نے ان کے نام پر ہی رکھ دیا بیٹے کا نام پنکج خان

ظفر خان، پنکج خان کے والد

احمد آباد۔ والدین اپنے بچے کا نام رکھتے وقت بچوں کے نام والی کتاب میں گھنٹوں وقت دیتے ہیں کیوں کہ وہ یہ تصور کر رہے ہوتے ہیں کہ ان کی پسند والے نام کا کوئی بڑا اثر ان کے بچوں کی زندگی پر پڑے گا ۔ لیکن ہم آج آپ کو ایک ایسے نام کی کہانی بتانے والے ہیں جو ہندو اور مسلم کو جوڑ کر رکھا گیا ہے اور اس نام کے پیچھے ایک ڈاکٹر کی کافی محنت اور کوشش بھی چھپی ہوئی ہے۔ سول ہاسپيٹل کے کڈنی اسپیشلسٹ ڈاکٹر پنکج شاہ مسلم خاندان کے اس اقدام سے اتنےخوش نظرآ رہے ہیں کہ ان کا کہنا ہےکہ میں نے زندگی میں پیسے نہیں کمایا لیکن اب جو کمایا اس کے بعد کچھ کمانےکی خواہش نہیں ہو رہی۔

لیوپس نیفرائٹس نامی بیماری ایک ایسی پیچیدہ بیماری ہے جس کی وجہ سے خواتین کو ماں بننے میں رکاوٹ پیدا ہوتی ہے۔ اگر ماں بننے کا موقع مل بھی جائے تو کہا نہیں جا سکتا کہ بچہ صحت مند ہو ۔ احمد آباد کے شاہ عالم علاقے میں رہنے والے ظفرخان آٹو رکشہ چلا کر اپنی زندگی گزارتے ہیں ۔ انہوں نے اپنے لڑکے کا نام رکھا ہے پنکج خان ۔ پنكج خان نام رکھنے کے پیچھے ایک لمبی کہانی ہے ۔ دراصل ظفر کی زوجہ ایک ایسی بیماری کی شکار ہے جس کی وجہ سے ان کے بچے پیدائش کے وقت سے کسی نہ کسی بیماری کا شکار ہو جاتے ہیں اور صرف چند ماہ میں ان کی موت ہو جاتی ہے ۔ اس بیماری سے پریشان ہوکر ظفر اپنی زوجہ کو لے کر احمد آباد کے سول ہاسپٹل پہنچے جہاں پر ان کی ڈاکٹر پنکج شاہ سے ملاقات ہوئی ۔

پنکج شاہ نے کافی محنت کی، جس کے بعد شمیمہ بانو کے گھر ایک لڑکے کی پیدائش ہوئی اس لڑکے کا نام گھر والوں نے رکھا ہے پنکج خان ۔ اس سلسلے میں ڈاکٹر پنکج بتاتے ہیں کہ اس بیماری کی علامات عام ہونے کی وجہ سے جلدی بیماری کے بارے میں پتہ نہیں چلتا اور جب لوگوں کو اس کے بارے میں پتہ چلتا ہے تو کافی دیر ہو چکی ہوتی ہے۔

Loading...

ڈاکٹر پنکج شاہ ۔ سول ہاسپٹل ڈاکٹر پنکج شاہ ۔ سول ہاسپٹل

ڈاکٹر کو زمین کا خدا کہا جاتا ہے لیکن ڈاکٹرکےکام سے متاثر ہو کراس کا نام  ڈاکٹر کے نام پر رکھ دینا اپنے آپ میں ایک منفرد معاملہ ہے۔ اس سلسلے میں شميمہ کا کہنا ہےکہ ڈاکٹر صاحب نے اگرعلاج نہیں کیا ہوتا تو شاید میری گود میں بچہ نہیں ہوتا ۔ اس سلسلے میں پنكج خان کے دادا کہتے ہیں کہ اس میں حیرانی کس بات کی جو بھی کرتا ہے اللہ کرتا ہے۔ ایسے میں ڈاکٹر پنكج شاہ ہمارے لئے ایک ذریعہ بنے اور ہم نے ان کی اس خدمت کو یاد رکھنے کے لئے اپنے بچے کا نام پنكج خان رکھا ہے۔

Loading...