اونا واقعہ کے بعد گجرات میں تبدیلی مذہب کے معاملات میں تین گنا اضافہ

بدھسٹ سوسائٹی آف انڈیا کے چیئرمین پی جی جيوتكر کے مطابق اونا واقعہ کے بعد سے ریاست میں تقریبا 1500 سے 1600 تبدیلی مذہب کے معاملات درج کئے گئے ہیں۔

Jul 14, 2017 02:30 PM IST | Updated on: Jul 14, 2017 02:30 PM IST
اونا واقعہ کے بعد گجرات میں تبدیلی مذہب کے معاملات میں تین گنا اضافہ

Image Source: News18.com

احمد آباد : گجرات میں گزشتہ ایک سال میں تبدیلی مذہب کے معاملات میں تین گنا اضافہ درج کیا گیا ہے ۔ انڈین ایکسپریس کی خبر کے مطابق پہلے کے مقابلہ گزشتہ سال تقریبا 1000 معاملات زیادہ سامنے آئے ہیں۔اس اضافہ کو گجرات کے اونا میں گزشتہ سال گئو رکشکوں کے ذریعہ دلتوںکی پٹائی سے جوڑ کر بھی دیکھا جا رہا ہے۔ خیال رہے کہ اونا میں جولائی 2016 میں دلتوں کی پٹائی کا ویڈیو سامنے آیا تھا، جس کے بعد ملک بھر میں گئو ركشكوں کی مخالفت میں غصہ ظاہر کیا گیا۔

بی آر امبیڈکر کی طرف سے شروع کی گئی بدھسٹ سوسائٹی آف انڈیا کے چیئرمین پی جی جيوتكر کے مطابق اونا واقعہ کے بعد سے ریاست میں تقریبا 1500 سے 1600 تبدیلی مذہب کے معاملات درج کئے گئے ہیں۔ اس سے پہلے سال بھر میں تبدیلی مذہب کے 500 سے 600 معاملات درج کئے جاتے تھے۔

جيوتكر نے مزید بتایا کہ یہ ان کے غصہ ظاہر کرنے کا ایک طریقہ ہے، جہاں وہ اپنا غصہ ظاہر کر رہے ہیں، جونا گڑھ، سریندرنگر، پالن پور، احمد آباد اور كلول سمیت پورے گجرات میں دلت تیزی سے مذہب تبدیل کرر ہےہیں ۔ احمد آباد (مغرب) سے بی جے پی کے دلت لیڈر کا کہنا ہے کہ مجھے لگتا ہے کہ گجرات حکومت کو اونا واقعہ میں فوری کارروائی کرنی چاہیے تھی، لیکن اس کے بعد واقعہ پر صرف سیاست ہوئی۔

Loading...

Loading...
Listen to the latest songs, only on JioSaavn.com